Categories
Breaking news

260 افراد کی المناک موت کا سبب بنی بلدیہ فیکٹری کو مسمار کرنے کا کام شروع

مزدور بلدیہ فیکٹری کو مسمار کرنے کے لیے کام کر رہے ہیں - فوٹو: جنگ
مزدور بلدیہ فیکٹری کو مسمار کرنے کے لیے کام کر رہے ہیں – فوٹو: جنگ

کراچی کے علاقے بلدیہ ٹاؤن میں لگ بھگ 260 افراد کی المناک موت کا سبب بننے والی بلدیہ فیکٹری کی سوختہ عمارت کو سانحہ کے 10 سال بعد مسمار کرنے کا کام شروع کردیا گیا ہے۔

ضلع کیماڑی پولیس کے مطابق اس سلسلے میں بلدیہ فیکٹری مالکان یا متعلقین کی جانب سے تمام اجازت نامے حاصل کیے گئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق فیکٹری کی سوختہ عمارت مسمار کرنے کے سلسلے میں سندھ ٹریڈنگ اسٹیٹ کی جانب سے این او سی جاری کیا گیا ہے۔

سانحہ بلدیہ فیکٹری کیس، بریت کیخلاف سرکار کی اپیل پر رؤف صدیقی کو نوٹس جاری

کراچی سندھ ہائی کورٹ کے جسٹس کے کے آغا کی سربراہی…

سائٹ بی پولیس کے مطابق فیکٹری کی عمارت کے حوالے سے عدالت کی جانب سے بھی کوئی احکامات جاری نہیں کیے گئے تھے۔

خیال رہے کہ 11 ستمبر 2012 کو پیش آئے سانحہ میں 260 افراد جاں بحق ہوئے تھے۔

جاں بحق ہونے والوں میں فیکٹری کے ملازمین تھے جن کے لواحقین کی جانب سے اس سلسلے میں اعتراضات اٹھائے جا رہے ہیں تاہم پولیس کے مطابق کسی کے پاس فیکٹری کی عمارت گرانے کے حوالے سے تحریری معاہدہ یا کوئی دستاویز نہیں ہے۔

ذرائع کے مطابق فی الوقت یہ عمارت گرا کر جگہ خالی کروائی جا رہی ہے، جس کے لیے گزشتہ روز سے یہاں پر متعدد مزدور کام کر رہے ہیں۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *