Categories
Breaking news

یکم دسمبر سے پٹرول کی قیمت میں مزید اضافہ یقینی ہوگا

حکومت نے پچھلی بار پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ نہیں کیا تھا۔ لیکن موجودہ صورتحال کو دیکھ کر یہ کہا جاسکتا ہے کہ یکم دسمبر سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ یقینی نظر آرہا ہے۔

یکم دسمبر سے پیٹرول کی قیمت بڑھنے کی بنیادی وجوہات فی لیٹر پیٹرول پر 4 روپے پٹرولیم لیوی، ڈیلرز کے منافع کی شرح میں اضافہ اور پھر عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمت بڑھنے کا اثر ہوں گی۔

ڈیلرز کا مارجن 99 پیسے بڑھانے کی درخواست کی گئی ہے، ترجمان وزارت توانائی و پٹرولیم

ترجمان وزارت توانائی و پٹرولیم کا کہنا ہے کہ بہت سارے ڈیلرز اپنے پمپ کھولنے کو تیار ہیں لیکن انھیں روکاجارہا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کے مشیر خزانہ شوکت ترین نے 22 نومبر کو پریس کانفرنس میں واضح طور پر کہہ دیا تھا کہ عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) سے مذاکرات طے پاگئے ہیں، پٹرولیم لیوی ہر ماہ 4 روپے بڑھانی ہے۔

پرچون کی دکانوں پر پٹرول 250 روپے فی لیٹر تک فروخت کیا جارہا ہے، شہری

شکرگڑھ میں بھی پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کی ہڑتال پر پیٹرول پمپس بند ہیں۔ پیٹرول پمپس بند ہونے سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

مشیر خزانہ کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف سے مذاکرات میں ہم اپنے مؤقف پر کھڑے رہے، پٹرولیم لیوی 10 ارب روپے کرنےکا کہا تھا وہ توہم نہیں کرسکیں گے، پٹرولیم لیوی ہر ماہ 4 روپے بڑھانی ہے اور پٹرولیم ڈیولپمنٹ لیوی30 روپے تک لے کر جانی ہے۔

اب دیکھنا یہ ہے کہ یکم دسمبر کو پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کتنا ہوتا ہے۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *