Categories
Breaking news

یورپ میں باسکی نسل کے لوگ سب سے الگ ہیں، جینیاتی تحقیق

Advertisement

میڈرڈ(محمد نبی) اس تحقیق کو سب سے بڑی تحقیق مانا جاتا ہے جس میں 2000 ڈی این اے کے نمونے لئے گئے تھے۔ اسٹڈی نے یہ ثابت کر دیا کہ باسکی باشندے دیگر یورپی اقوام سے مختلف ہیں اور جینیاتی طور پر الگ تھلگ واقع ہوئے ہیں۔ یہ تحقیق Pompeu Fabra university کی طرف سے ہوئی تھی۔ تحقیق کے دوران یہ بھی معلوم ہوا کہ جنیاتی تبدیلی کا عمل 2,500 سال پہلے آئرن ایج میں شروع ہوا تھا۔ محقیقین کا کہنا ہے کہ باسکی نسل کے لوگ یورپ میں بڑی ہجرت کی لہر سے متاثر ہوئے، ٹھیک اسی طرح جس طرح ارد گرد آبادی متاثر ہوئی۔ تحقیق میں اس امر کی بھی وضاحت کی گئی ہے کہ جنیات میں یہ تبدیلی کس طرح رونما ہوئی۔ اس کے مطابق یہ اس لئے ممکن ہوا کہ کئی صدیوں تک باسکی باشندے علیحدگی میں رہے اور اور ان کے جنسی عمل میں تنوع نہ آیا۔ باسکی زبان کا لہجہ دیگر یورپی زبانوں سے یکسر مختلف ہے۔ یہی وجہ ہے کہ زبان کی اس اجنبیت نے دوسری اقوام کے ساتھ روابط کے راستے مسدود و محدود کر دیئے۔ اور اس طرح ایک الگ تھلگ نسل وجود میں آئی۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *