Categories
Breaking news

یورپی یونین کا مشترکہ ‘کورونا پاس‘ کے اجراء کا عمل عام شہریوں کے لیے سفری آسانیوں کا سبب بنے گا،وفاقی جرمن وزیر

یورپی یونین کا ارادہ ہے کہ وہ کورونا وائرس کی عالمی وبا کے باعث پیدا شدہ بحرانی صورت حال میں اپنے رکن ممالک میں سفری آسانیوں کے لیے عام شہریوں کو یکساں طرز کے ایک مشترکہ ’کورونا پاس‘ کا اجراء اگلے ماہ شروع کر دے گی۔یورپی امور کے جرمن وزیر میشائل رَوتھ نے امید ظاہر کی ہے کہ کووڈ انیس کے وبائی مرض سے متعلق اور عرف عام میں ‘کورونا پاس‘ یا ‘گرین سرٹیفیکیٹ‘ کہلانے والی اس دستاویز کے اجراء پر اس بلاک کی رکن ریاستوں کے مابین حتمی اتفاق رائے جلد ہو جائے گا۔

میشائل رَوتھ نے منگل کے روز برسلز میں صحافیوں کو بتایا کہ یورپ میں اس سال موسم گرما کا سیاحتی سیزن شروع ہونے والا ہے اور یورپی یونین میں کورونا وائرس کی نئی انفیکشنز کی تعداد کم ہوتے جانے کے باعث زیادہ سے زیادہ ممالک اپنی سرحدوں کو معمول کی عوامی آمد و رفت کے لیے کھول رہے ہیں۔یورپی امو رکے وفاقی جرمن وزیر نے کہا کہ یونین کی سطح پر ایک مشترکہ ‘کورونا پاس‘ کے اجراء کا عمل عام شہریوں کے لیے سفری آسانیوں کا سبب بنے گا اور انہیں امید ہے کہ اس بلاک کی رکن ریاستوں کے مابین اس حوالے سے جلد ہی حتمی اتفاق رائے طے پا جائے گا۔

یورپی یونین کے منصوبوں کے مطابق کورونا وائرس سے متعلق یہ ‘گرین سرٹیفیکیٹ‘ ایسے شہریوں کو جاری کیا جائے گا، جن کی ویکسینیشن ہو چکی ہو، جو کورونا وائرس سے متاثر ہونے کے بعد دوبارہ صحت یاب ہو چکے ہوں یا جن کے کورونا ٹیسٹوں کے نتائج منفی آئے ہوں۔ان سرٹیفیکیٹس کے حامل افراد 27 رکنی یورپی یونین میں کہیں بھی باآسانی جا سکیں گے۔ یہ تبدیلی اس لیے بھی خوش آئند ہو گی کہ یورپی یونین میں فضائی سفر اور سیاحت کے شعبوں کو گزشتہ ایک سال سے بھی زائد عرصے کے دوران عوامی نقل و حرکت اور سفر سے متعلق سخت پابندیوں کی وجہ سے بے تحاشا کاروباری نقصانات برداشت کرنا پڑے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *