Categories
Breaking news

گلاسگو میں انس سرورکو ہراساں کیوں اور کس نے کیا؟

Advertisement

گلاسگو (طاہر انعام شیخ) لیبر پارٹی اسکاٹ لینڈ کے سربراہ انس سرور کو بریگزٹ پارٹی کے ایک سابق امیدوار نے نسلی اور مذہبی نفرت کے فقرے کس کر ہراساں کیا، اسلام کے خلاف ہرزہ سرائی کی اور کئی منٹ تک ان کا پیچھا کرتا رہا، واقعات کے مطابق انس سرور اسکاٹش پارلیمنٹ کے باہر ایک انٹرویو دینے کی تیاری کررہے تھے کہ ایک نسل پرست اور اسلامو فوبیا کے شکار شخص ڈیوڈ بلائنٹائن نے ان کو گھیر لیا اور ان کو گلوبلسٹ اسلامو، مارکسٹ پارٹی کا حصہ قرار دیا۔ Globalist Islamo Maryist Partyاور ا سائلم سیکرز کو بچوں کے ریپ کرنے والے قرار دیا۔انس سرور نے اس غنڈہ گردی کے جواب میں نہایت تحمل اور بردباری کا مظاہرہ کیا اور اس کو جواب دیا کہ تمہاری باتیں مجھ سے زیادہ خود تمہارے کردار کی عکاسی کرتی ہیں۔ تم اپنی ان بہودہ باتوں کو کسی اور جگہ لے جائو، اس موقع پر موجود آئی ٹی ویITVکے رپورٹر پیٹر اسمتھ نے ڈیوڈ بلائنٹائن کو غنڈہ گردی کرنے والا نسل پرست قرار دیا۔ پیٹر اسمتھ نے اس معاملے میں مداخلت کرتے ہوئے کہا کہ میں ایک نسل پرست کو پہچان سکتا ہوں۔ سوشل میڈیا پر اس واقعہ کا ذکر کرتے ہوئے پیٹر اسمتھ نے انس سرور سے زبردست اظہار یکجہتی کیا اور کہا کہ مجھے افسوس ہے کہ میں انس سرور کی حمایت میں اس سے زیادہ کچھ نہ کرسکا۔ اسکاٹش نیشنل پار ٹی کے ممبر پارلیمنٹ نیل گیری، اسکاٹش کنزرویٹو کی رہنما رتھ ڈیوڈ سن اور دیگر بے شمار ممبران پارلیمنٹ نے انس سرور کے ساتھ ہونے والی غنڈہ گردی کی مذمت کی اور کہا کہ انس سرور نے اس موقع پر نہایت صبر، تحمل اور باوقار رویے کا مظاہرہ کیا۔ ان افراد نے آئی ٹی وی کے رپورٹر پیٹر ایڈم اسمتھ کے رویے کی بھی بہت تعریف کی۔ انس سرور نے پیٹر اسمتھ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ان کے لیے اس معاملے میں ڈیوڈ بلائنائن کے ساتھ الجھنا ضروری نہ تھا لیکن انہوں نے چپ چاپ خاموش رہنا پسند نہ کیا میں ان کی اس مدد کے نہایت ممنون ہوں۔ واضح رہے کہ ڈیوڈ بلائنٹائن2019ء کے الیکشن میں ایڈنبرا سائوتھ ویسٹ کے حلقے سے بریگزٹ پارٹی کی طرف سے امیدوارر ہے۔ ان کو625ووٹ ملے۔ الیکشن مہم کے دوران انہوں نے اسلام کو بچوں کا ریپ کرنے والا موٹ کا کلٹ قرار دیا۔ جس پر مسلم کونسل آف اسکاٹ لینڈ نے ڈیوڈ کی سخت مذمت کی تھی۔ کونسل نے ڈیوڈ معاشرے کو تقسیم کرنے اور نفرت پیدا کرنے والا شخص قرار دیا تھا۔

Advertisement
Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *