Categories
Breaking news

کینری جزیرے میں پولیس کی تارکین وطن کیمپ پر ربڑ فائر، 8 افراد کو تحویل میں لے لیا گیا

Advertisement
Advertisement

میڈرڈ(محمد نبی) منگل کے روز پولیس نے جھڑپ کے دوران کینری جزیرے پرایک تارکین وطن کیمپ پر ربڑکی گولیاں فائرکی۔ اطلاعات کے مطابق 6 اپریل کو یہ واقعہ ریس کیمپ میں پیش آیا جہاں بڑی تعداد میں تارکین وطن موجود ہیں۔ مقامی حکام نے کہا ہے کہ پولیس نے 8 تارکین وطن کو اپنی تحویل میں لے لیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق ‘اکیم’ گروپ جو تارکین وطن کی مدد کر رہا ہے کی طرف سے ہنگامہ آرائی ہوئی تھی۔ حالات کو معمول پر لانے کے لئے پولیس کو ربڑکی گولیاں فائر کرنی پڑی۔
اپنی شناخت ظاہر نہ کرتے ہوئے ایک مقامی شخص کا کہنا تھا کہ ابتدائی طور پر جھگڑا سینیگالی اورمراکشی باشندوں کے درمیان ہوا۔ تنازعہ خوراک کی وجہ سے کھڑا ہوا تھا۔ اسی اثنا میں کئی لوگ زخمی ہوگئے اور ایمبولینس پہنچ گئیں۔ تاہم اس نے مزید تفصیلات دینے سے گریز کیا۔
لاس ریس کیمپ میں 2400 تارکین وطن رہ رہے ہیں۔ اکیم، سوموس ریڈ اور دوسرے گروپ ان کو سپورٹ کر رہے ہیں۔ ان گروہوں کا کہنا تھا کہ سہولیات کم ہیں اور انتظامات ناقص ہیں۔ کیمپ میں سردی ہے اور بھیڑ زیادہ ہے۔ گرم پانی سمیت اشیائے خورد و نوش کا فقدان ہے۔ بہت سارے تارکین وطن کیمپ سے باہر جاتے ہیں اور کھلے آسمان کے نیچے یا جنگلات میں جا کر سو جاتے ہیں۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *