Categories
Breaking news

کچے میں ڈاکوؤں کیخلاف آپریشن، وزیرِاعلیٰ سندھ جائزہ لینے پہنچ گئے

کچے میں ڈاکوؤں کیخلاف آپریشن، وزیرِاعلیٰ سندھ جائزہ لینے پہنچ گئے

سندھ کے شہر شکار پور میں کچے کے علاقے گڑھی تیغو میں ڈاکوؤں کے خلاف جاری آپریشن چوتھے روز میں داخل ہو چکا ہے، وزیرِ اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ آپریشن کا جائزہ لینے شکار پور پہنچ گئے۔

وزیرِ اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے ایس ایس پی آفس میں امن و امان کی صورتِ حال پر مشاورت کی، انہوں نے شہید اہلکاروں کے لواحقین سے بھی ملاقات کی۔

وزیرِ اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ ایس ایس پی آفس شکار پور پہنچے، جہاں ان کی سربراہی میں اجلاس ہوا جس میں آئی جی سندھ مشتاق مہر، آر پی او سکھر ڈاکٹر کامران فضل اور ڈی آئی جی لاڑکانہ ناصر آفتاب شریک ہوئے۔

کچے میں پولیس کا آپریشن ،8 ڈاکو ، 2 اہلکار شہید

سکھر کے ریجنل پولیس آفیسر کامران فضل نے کہا ہے کہ کچے میں جاری آپریشن کے دوران اب تک 8 ڈاکو ہلاک اور 12 زخمی ہوئے ہیں، جبکہ 2 پولیس اہلکار سمیت 3 شہید اور 4 زخمی ہوئے ہیں ۔

وزیرِ اعلیٰ سندھ نے شہید پولیس اہل کار منور کے اہلِ خانہ سے اظہارِ تعزیت کیا۔

اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیرِ اعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ نے کہا کہ شہید اہلکاروں کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی، شہداء کے لواحقین کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پولیس کے جوانوں کو سلام پیش کرتا ہوں، پولیس اہلکاروں کے قتل میں ملوث ملزمان کو انجام تک پہنچائیں گے، کچے کے تمام علاقوں کو خالی کرایا جائے گا۔

شکارپور: کچے میں آپریشن جاری، 3 ڈاکو گرفتار

ایس ایس پی امیر سعود مگسی کے مطابق آپریشن گڑھی تیغو اور دیگر علاقوں میں کیا گیا، جس میں شکارپور سمیت کشمور، لاڑکانہ اور جیکب آباد کی نفری نے بھی حصہ لیا۔

مراد علی شاہ نے کہا کہ ایک لاکھ 50 ہزار ایکڑ اراضی خالی کرائیں گے، سندھ حکومت شہید پولیس اہلکاروں کے ورثاء کے ساتھ ہے، حکومت شہداء کے بچوں کے تمام تعلیمی اخراجات برداشت کرے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ مسائل ہیں لیکن 2008ء سے پہلے سے حالات اچھے ہیں، پولیس کے جوانوں کی شہادتوں کی وجہ سے امن و امان قائم ہوا ہے، پولیس کی مدد سے علاقے میں پہلے بھی امن قائم کیا تھا، اب بھی کریں گے۔

وزیرِ اعلیٰ سندھ نے یہ بھی کہا کہ مجھے اطلاع نہیں کہ وفاقی وزیرِ داخلہ شیخ رشید سندھ آ رہے ہیں، شیخ رشید سندھ آئیں یا شکار پور، وہ وفاقی وزیرِداخلہ ہیں، آ سکتے ہیں۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *