Categories
Breaking news

کورونا وائرس کی ایک نئی قسم دریافت، ماہرین نے خطرے کی گھنٹی بجادی

Advertisement
Advertisement

کورونا وائرسسنگاپور میں محققین نے کورونا وائرس کی ایک نئی قسم دریافت کی ہے جو معمولی انفیکشن کا سبب بنتی ہے۔

کورونا وائرس کی نئی قسم سے متاثرہ مریضوں کے بہتر طبی نتائج برآمد ہوئے ہیں،ان مریضوں میں آکسیجن کی کمی اور انتہائی نگہداشت کی ضرورت نسبتاََ کم پائی گئی ہے۔

سنگاپور میں کرونا کی نئی قسم سے متعلق تحقیق میں میں این سی آئی ڈی، ڈیوک این یو ایس میڈیکل اسکول سمیت مختلف اداروں کے محققین شامل تھے۔

نئی تحقیق کے حوالے سے ڈیوک این یو ایس میڈیکل اسکول کے گیون اسمتھ کا کہنا تھا کہ کورونا وائرس میں جنیاتی تبدیلی نے مریضوں میں بیماری کی شدت کو کم کیا ہے۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ تحقیق میں سامنے آنے والے نتائج سے ویکسین بنانے اور کورونا سے متاثرہ مریضوں کا علاج کرنے میں مدد ملے گی۔

نیشنل یونیورسٹی آف سنگاپور کے سینیئر ڈاکٹر اور بین الاقوامی سوسائٹی برائے متعدد امراض کے صدر پال ٹیمبیا کا غیر ملکی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ وائرس کا زیادہ متعدی لیکن کم جان لیوا ہونا اچھی بات ہے۔

ڈاکٹر ٹیمبیا کا کہنا تھا کہ یہ وائرس کے حق میں ہوتا ہے کہ وہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کو متاثر کرے لیکن انہیں مارے نہیں کیونکہ وائرس کا کھانے اور رہائش کے لیے انحصار اپنے میزبان یا متاثرہ جسم پر ہوتا ہے۔

خیال رہے کہ دنیا بھر کو اپنی لپیٹ میں لینے والا کورونا وائرس چین کے شہر ووہان سے پھیلنا شروع ہوا تھا، سنگار پور میں وائرس پر قابو پانے سے پہلے ہی یہ ایک شخص سے دوسرے شخص کے ذریعے پھیل گیا تھا۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *