Categories
Breaking news

کراچی سے لاپتہ دعا زہرہ کے اغوا کا ڈراپ سین

کراچی سے لاپتہ دعا زہرہ کے اغوا کا ڈراپ سین

کراچی کے علاقے الفلاح سے لاپتہ ہونے والی لڑکی دعا زہرہ اوکاڑہ حویلی لکھا سے برآمد ہوگئی، پولیس نے دعا زہرہ کو اپنی تحویل میں لے لیا ہے۔

دعا زہرہ نے اپنی مرضی سے شادی کرنے کا وڈیو بیان بھی جاری کردیا ہے، بیان میں دعا زہرہ کا کہنا ہے کہ اس نے اپنی مرضی سے ظہیر احمد سے شادی کی ہے۔

لڑکی نے اپنے بیان میں کہا کہ والدین تشدد کرتے تھے اور زبردستی شادی کروانا چاہتے تھے، میری عمر اٹھارہ سال ہے، گھروالوں نے غلط عمر بتائی ہے۔

پولیس کے مطابق دعا اور اس کا خاوند ظہیر مقامی زمیندار کے پاس ٹھہرے ہوئے تھے۔

دعا کے والد اب تک لڑکی کے نکاح سے لاعلم ہیں

انہوں نے کہا کہ دعا ابھی صرف چودہ سال کی ہے میری شادی 2005 میں ہوئی تھی ۔

گزشتہ روز ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر عابد خان نے دعا زہرہ کے ملنے کی تردید کرتے ہوئے کہا تھا کہ لاہور پولیس کو کراچی پولیس نے لڑکی کا نکاح نامہ فراہم کیا، پولیس نکاح نامے پر ایڈریس سے لڑکی کو تلاش کر رہی ہے۔

جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے دعا زہرہ کے والد کا کہنا تھا کہ انہیں لڑکی کے بارے میں کوئی معلومات نہیں، پولیس نے جو نکاح نامے کے بارے میں بتایا ہے، اس کے بارے میں ہمیں کوئی معلومات نہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہمارا لاہور میں کوئی فیملی ممبر نہیں ہے، نکاح کی خبروں کی تصدیق نہیں کرسکتا۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published.