Categories
Breaking news

کاتالونیا میں مذہب کا عمل دخل کتنا ہے؟

Advertisement
Advertisement

بارسلونا (محمد نبی) ایسٹر کے تہوار اور کچھ دوسرے مذہبی رسم و رواج اپنی جگہ پر موجود ہیں اور ان کو جوش و خروش کے ساتھ منایا بھی جاتا ہے مگر گزشتہ چند دہائیوں کے دوراں کاتالونیا کی مذہبی فضا یکسر بدل چکی ہے۔ کاتالان نیوز کے پلیٹ فارم سے ایک ‘پوڈ کاسٹ’ میں ڈاکٹر مارگریرا بتایا گیا ہے کہ جمہوریت آنے کے بعد کیتھولک چرچ کا اثر آہستہ آہستہ ختم ہوتا گیا۔ اس کے ساتھ ہی ملحدین، تشکیک پسندوں اور غیر مذہبی رجحان رکھنے والے افراد کی تعداد میں بڑی تیزی سے اضافہ ہوا ہے اور آئے روز یہ رجحانات بڑھتے جا رہے ہیں۔
اس کے ساتھ ہی کاتالونیا میں مذہب کے حوالے سے ایک تنوع آیا ہے۔ یکسانیت کے بجائے مختلف مذاہب اور مسالک کے لوگ آباد ہوئے ہیں۔ اس کی وجہ پناہ گزینوں اور تارکین وطن کی بڑھتی آبادی ہے جہاں عیسائت کے ساتھ اسلام کے ماننے والوں کی آبادی میں بھی اضافہ ہوا ہے۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *