Categories
Breaking news

ڈپورٹیشن فلائٹ کو منسوخ کرو،جرمنی: میں افغانیوں کی ملک بدری کے خلاف مظاہرہ

Advertisement

افغانستان میں سلامتی کی خستہ صورت حال کے مد نظر جرمنی میں پناہ حاصل کرنے کے خواہش مند افراد کو’ڈیپورٹیشن فلائٹ‘ کے ذریعے ملک بدر کر دینے کا اقدام خاصا متنازع ہے۔
مظاہرین بدھ کی دیر رات برلن ہوائی اڈے کے ٹرمنل پانچ پر جمع ہوئے۔ وہ پناہ حاصل کرنے کے خواہش مند افراد کی درخواستوں کو مسترد کر دیے جانے اور طیارے پر سوار کر کے انہیں افغانستان روانہ کر دینے کے فیصلے کے خلاف احتجاج کر رہے تھے۔ گر چء پہلے 50 سے 75 کے درمیان لوگوں کے جمع ہونے کی امید تھی لیکن تقریباً 350 افراد احتجاج میں شامل تھے۔

Advertisement

Jetzt am BER! 500 Leute protestieren gegen die Abschiebung nach Afghanistan und versuchen, sie zu stoppen.
@NoBorder_Berlinpic.twitter.com/x2dZ0DjQMF

— Flüchtlingsrat Berlin (@fluchtlingsratB) April 7, 2021

مظاہرین نے تختیاں اٹھارکھی تھیں جن پر حکام سے ڈپورٹیشن فلائٹ کو منسوخ کرنے کی اپیل کی گئی تھی۔ کچھ مظاہرین نے ہوائی اڈے تک جانے والی سڑکوں کو جام کر دیا۔ مظاہرے کا اہتمام برینڈن برگ ریفیوجی کونسل نے کیا تھا۔ طیارے کے افغانستان روانہ ہونے کے بعد ہی مظاہرہ ختم ہوا۔
بعد میں جمعرات کی صبح ایک جرمن طیارے کے ذریعہ بیس افغان شہری کابل پہنچ گئے۔ دسمبر 2016 میں ملک بدری کی پالیسی نافذ کیے جانے کے بعد سے یہ 38 ویں ڈیپورٹیشن فلائٹ تھی۔ اب تک مجموعی طورپر ایک ہزار 35 افغان شہریوں کو پناہ حاصل کرنے کی ان کی درخواستیں مسترد کر کے افغانستان واپس بھیجا جا چکا ہے

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *