Categories
Breaking news

ڈسکہ این اے 75 ضمنی الیکشن: پولنگ کا عمل مکمل، ووٹوں کی گنتی جاری

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 75 ڈسکہ میں پولنگ کا وقت ختم ہونے کے بعد ووٹوں کی گنتی کا عمل جاری ہے۔

این اے 75 کے ضمنی انتخاب کے سلسلے میں صبح 8 بجے سے شام پانچ بجے تک پولنگ کا عمل بلاتعطل جاری رہا۔

این اے 75 ڈسکہ کے 360 پولنگ اسٹیشنز پر خوب گہما گہمی نظر آئی، لوگوں نے بڑھ چڑھ کر حقِ رائے دہی استعمال کیا، کہیں بزرگ شہری ووٹ ڈالنے کے لیے سہارا لے کر پہنچے تو کہیں معذوری کو بھی خاطر میں نہیں لایا گیا۔

ڈسکہ این اے 75: انتخابی دنگل کیلئے مرغوں کا نمائشی دنگل سج گیا

ڈسکہ این اے 75 میں انتخابی دنگل کے لیے مرغوں کا نمائشی دنگل سج گیا۔

ڈسکہ: خاتون نے ووٹ پر مہر لگانے کے بعد بیلٹ پیپر سمیت دوڑ لگادی

بیلٹ پیپر لے کربھاگنے پر مسلم لیگ ن کے پولنگ ایجنٹ نے احتجاج کرتے ہوئے شورشرابہ بھی کیا۔

حلقے این اے 75 ڈسکہ میں ووٹرز کی مجموعی تعداد 4 لاکھ 94 ہزار ہے، جبکہ پولنگ کے لیے کل 360 پولنگ اسٹیشنز بنائے جن میں سے 47 پولنگ اسٹیشنز کو حساس ترین قرار دے کر اے کیٹیگری میں شامل کیا گیا۔

14 پولنگ اسٹیشنز کو حساس قرار دے کر بی کیٹیگری میں جبکہ 137 پولنگ اسٹیشنز سی کیٹیگری میں شامل کیا گیا۔

اے کیٹیگری کے 47 پولنگ اسٹیشنز پر سی سی ٹی وی کیمرے لگائے گئے۔

ای سی پی نے الیکشن کی تیاری سے متعلق کہا تھا کہ پورے حلقے میں سیکیورٹی کے لیے 4 ہزار 162 پولیس اہلکار اور رینجرز کے 1 ہزار 48 جوان تعینات ہوں گے جبکہ پاک فوج کی 10 ٹیمیں کوئیک رسپانس فورس کے طور پر موجود رہیں گی۔

ضمنی الیکشن میں پی ٹی آئی کی فتح ہوگی، علی اسجد ملہی

سیالکوٹ کے قومی اسمبلی کے حلقے این اے 75 ڈسکہ میں ضمنی انتخاب میں پی ٹی آئی کے امیدوار علی اسجد ملہی نے کہا ہے کہ ضمنی الیکشن میں پی ٹی آئی کی فتح ہوگی۔

نوشین افتخار نے ووٹ ڈالا، اپنے پولنگ ایجنٹ سے سوال کر دیا

حلقہ این اے 75 میں مسلم لیگ نون کی امیدوار نوشین افتخار نے اپنا ووٹ کاسٹ کر دیا، جب کہ اس وقت دلچسپ صورتِ حال پیدا ہو گی جب انہوں نے اپنے ہی پولنگ ایجنٹ پر سوال داغ دیا۔

ضمنی الیکشن کے باعث سیالکوٹ میں دفعہ 144 نافذ کی گئی، اس موقع پر لائسنس یافتہ یا بغیر لائسنس کے اسلحے کی نمائش کی اجازت بھی نہیں تھی۔

خیال رہے کہ این اے 75 ڈسکہ کے ضمنی انتخاب میں حکمراں جماعت پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے امیدوار اسجد ملہی اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کی امیدوار نوشین افتخار میں کڑا مقابلہ ہے۔

واضح رہے کہ رواں سال 19 فروری کو 20 پولنگ اسٹیشنز کے نتائج متنازع ہونے پر الیکشن کمیشن نے رزلٹ روک لیا تھا۔

الیکشن کمیشن نے آج (10اپریل) پورے حلقے میں دوبارہ پولنگ کروانے کا حکم دیا تھا۔

آج کسی ووٹر کو روکا گیا تو انہیں پنجاب میں نوکری نہیں کرنے دیں گے، عطا اللّہ تارڑ

پاکستان مسلم لیگ نون کے رہنما عطا اللّہ تارڑ نے کہا ہے کہ آج کسی ووٹر کو روکا یا تنگ نہ کیا جائے، ورنہ انہیں پنجاب میں نوکری نہیں کرنے دیں گے۔

الیکشن کمیشن کی پابندی کے باوجود لیگیMPA انتخابی حلقے پہنچ گئے

الیکشن کمیشن کی پابندی کے باوجود نون لیگ کے ایم پی اے ذیشان رفیق انتخابی حلقے پہنچ گئے۔

پی ٹی آئی امیدوار اسجد ملہی نے سپریم کورٹ میں الیکشن کمیشن کے فیصلے کے خلاف اپیل کی تھی، تاہم سپریم کورٹ نے پی ٹی آئی کی اپیل مسترد کرتے ہوئے الیکشن کمیشن کا فیصلہ برقرار رکھا تھا۔

خیال رہے کہ 2018 کے عام انتخابات میں اس نشست پر پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سید افتخار الحسن نے واضح مارجن کے ساتھ تحریک انصاف کے علی اسجد ملہی کو ہی شکست سے دوچار کیا تھا۔

لیگی رہنما سید افتخار الحسن کے انتقال کے بعد یہ نشست خالی ہوئی تھی، تاہم اس پر ن لیگ نے سید افتخار کی صاحبزادی نوشین افتخار کو ہی پارٹی ٹکٹ دیا۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *