Categories
Breaking news

پرویز الہٰی کا شہباز شریف پر پولیس سے حملہ کرانے کا الزام

پرویز الہٰی کا شہباز شریف پر پولیس سے حملہ کرانے کا الزام

اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہٰی نے وزیرِ اعظم میاں محمد شہباز شریف پر پنجاب اسمبلی میں پولیس سے حملہ کرانے کا الزام لگا دیا اور کہا کہ شہباز شریف نے آئی جی اور چیف سیکریٹری کو براہِ راست ہدایت دی۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کے دوران انہوں نے کہا کہ پولیس کے اسمبلی میں آنے سے سارا معاملہ خراب ہوا، آئینی طور پر وزیر اعلیٰ کا الیکشن ہوا ہی نہیں۔

’’ عثمان بزدار آج بھی وزیر اعلیٰ ہیں‘‘

پرویز الہٰی نے کہا کہ کون کہتا ہے کہ آئینی بحران ہے یا صوبے میں وزیرِ اعلیٰ نہیں، یہ الیکشن ہوا ہی نہیں، جب تک نیا وزیرِ اعلیٰ حلف نہیں لیتا، پرانا وزیرِ اعلیٰ برقرار رہتا ہے، سردار عثمان بزدار آج بھی وزیرِ اعلیٰ پنجاب ہیں، ان کے اختیارات بحال ہیں، قانون سازی بھی عدالتوں نے کرنی ہے تو پھر اِدھر آ جائیں۔

رہنما ق لیگ کا کہنا ہے کہ خاتون رکنِ اسمبلی آسیہ امجد آج بھی وینٹی لیٹر پر ہیں، اس کے ذمے دار شہباز شریف، حمزہ، آئی جی اور ڈپٹی اسپیکر ہیں، شہباز شریف نے آئی جی کو کہا، جس پر اسمبلی میں پولیس آئی، سارا الیکشن ہاؤس کے اندر ہوتا ہے، ڈپٹی اسپیکر نے وزیٹر گیلری میں کھڑے ہو کر الیکشن کروایا۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن ہوا ہی نہیں حمزہ کے خلاف ووٹ ڈالنے کی جگہ پولیس تعینات تھی، پوری اسمبلی کا استحقاق مجروح ہوا ہے، جو بحران پید اہوا ہے اس کا ذمے دار کون ہے؟ الیکشن کرانے کا آرڈر عدالت کا تھا، جسے ہم سب نے مانا، پولیس نے سارا معاملہ خراب کیا۔

چوہدری پرویز الہٰی نے کہا کہ شہباز شریف اور حمزہ کے کہنے پر حملہ ہوا، ڈپٹی اسپیکر بھاگ کر وزیٹر گیلری میں چلے گئے، وزیٹر گیلری سے الیکشن کرایا گیا، آج بھی ڈیڑھ سو لوگ سفید کپڑوں میں اسمبلی میں کیوں بیٹھے ہیں، ہم ان کی تصاویر بنا رہے ہیں، پتہ چلے گا کہ کس کس تھانے کے لوگ بیٹھے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ شریفوں کو کوئی پوچھتا نہیں تھا، گلیوں میں پھرتے رہتے تھے، آئی جی کو میں نے بلایا، اسمبلی میں معافی منگوائی، شریفوں کا چہرہ سامنے آ گیا ہے، 18 ویں ترمیم کا چرچا کرتے ہیں، کہاں ہے 18 ویں ترمیم؟ شریفوں نے اپنی ذات کی خاطر اراکین کی عزت زمین بوس کر دی۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published.