Categories
Breaking news

ٹرین حادثے روزمرہ کا معمول بن گئے ہیں، مولانا فضل الرحمٰن

ٹرین حادثے روزمرہ کا معمول بن گئے ہیں، مولانا فضل الرحمٰن

جے یو آئی ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن کا گھوٹکی میں ٹرین حادثے سے متعلق کہنا ہے کہ ٹرین حادثے روزمرہ کا معمول بن گئے ہیں۔

مولانا فضل الرحمٰن نے ٹرین حادثے میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر اظہار افسوس کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ افسوسناک واقعے کی انکوائری کی جائے، روک تھام تب ہی ممکن ہے جب غفلت کے مرتکب افراد کو سزا دی جائے گی۔

ڈہرکی : ٹرین حادثے میں جاں بحق افراد کی تعداد 40 ہوگئی

ڈہرکی کے قریب ملت ایکسپریس اور سرسید ایکسپریس کے تصادم میں کئی بوگیاں پٹڑی سے اتر کر الٹ گئیں جس کے نتیجے میں 35 مسافر جاں بحق اور 40 سے 50 زخمی ہوگئے، ایس ایس پی گھوٹکی عمرطفیل نے بتایا کہ 20 سے 25 افراد کے ابھی بھی بوگیوں کے نیچے پھنسے ہونے کا خدشہ ہے۔

مولانا فضل الرحمٰن نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت مریضوں کو بہترین طبی امداد فراہم کرے۔

انہوں نے مزید کہا ہے کہ جے یو آئی کے کارکن متاثرہ افراد کی ہر ممکن مدد کریں۔

ٹرین حادثہ کیسے ہوا، ڈرائیور نے سب بتا دیا

ڈھرکی کے قریب پیش آئے افسوسناک حادثے کا شکار ہوئی ٹرین سرسید ایکسپریس کے ڈرائیور اعجازاحمد نے حادثے سے متعلق سب کچھ بتادیا ۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *