Categories
Breaking news

وہ 2 لوگ تھے، نہیں پتا تھا یہ مجھے مارنے آئے ہیں، بلال یاسین

پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما اور رکن پنجاب اسمبلی بلال یاسین کا کہنا ہے کہ مجھ پر حملہ کرنے والے وہ دو لوگ تھے میں سمجھا یہ پولیس والے ہیں، نہیں پتا تھا کہ یہ مجھے مارنے آئے ہیں۔

میو اسپتال لاہور میں جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے بلال یاسین نے کہا کہ میں معمول کے مطابق جمعہ کی نماز پڑھ کر اپنے حلقے میں گھوم رہا تھا۔

شدید زخمی ہونے کے باوجود بلال یاسین کی حالت خطرہ سے باہر ہے، مریم نواز

رہنما مسلم لیگ ن نے کہا کہ اللّٰہ انھیں جلد اور مکمل شفا عطا فرمائے۔ سب سے دعا کی درخواست ہے ۔

بلال یاسین نے کہا کہ ایک دوست آیا اور کہا کہ میرا کام ہے میرے ساتھ چلیں۔

ایم پی اے بلال یاسین نے کہا کہ مجھے خود ابھی تک پتا نہیں، کیا ہوا اور کیوں ہوا۔

بلال یاسین کے بیٹے نے والد پر حملے کی تفصیل سے متعلق بتادیا

بلال یاسین کے بیٹے نے کہا کہ والد کے علاقے کے دوران موٹرسائیکل سوارحملہ آوروں نے ان پر فائرنگ کردی۔

واضح رہے کہ پاکستان مسلم لیگ ن کے رکن پنجاب اسمبلی بلال یاسین پر فائرنگ کی گئی ہے، جس کے نتیجے میں وہ زخمی ہوگئے تھے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ رکن صوبائی اسمبلی بلال یاسین پر لاہور کے علاقے موہنی روڈ میں فائرنگ کی گئی ہے، موٹر سائیکل سوار دو نامعلوم افراد نے بلال یاسین پر فائرنگ کی۔

بلال یاسین کو میو اسپتال لاہور منتقل کردیا گیا ہے۔

میڈیکل سپرنٹنڈنٹ (ایم ایس) میو اسپتال ڈاکٹر افتخار کا کہنا ہے کہ بلال یاسین کو تین گولیاں لگیں ہیں، دو پیٹ میں اور ایک گولی ٹانگ پر لگی۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *