Categories
Breaking news

وفاقی وزرا الیکشن ضابطہ اخلاق اور عدالتی احکامات کی خلاف ورزی کرتی رہی: شاہد خاقان عباسی

Advertisement
Advertisement

شاہد خاقان عباسی

مسلم لیگ (ن) نے گلگت بلتستان اسمبلی کےلیے 15 نومبر کو ہونے والے انتخابات میں دھاندلی کے الزامات عائد کرتے ہوئے کہا کہ جو چیزیں 2018 کے پاکستان کے عام انتخابات میں ہوئیں وہ گلگت بلتستان کے انتخابات میں بھی بھرپور طریقے سے نظر آئیں، جو کردار انٹیلی جینس ایجنسیز کا تھا وہ یہاں بھی موجود تھا اور اسی طرح…

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ وفاقی وزرا آخری دن تک انتخابی مہم میں حصہ لیتے رہے اور اس پر اثر انداز ہوتے رہے۔

ساتھ ہی ان کا کہنا تھا کہ وفاقی وزرا کی بڑی تعداد الیکشن کمیشن کے متعین کردہ ضابطہ اخلاق اور عدالتی احکامات کی خلاف ورزی کرتی رہی جبکہ امور کشمیر کے وزیر انتخابی مہم کے پہلے روز سے آخری دن تک وہاں رہے اور 200 ارب روپے سے زائد کے وعدے کیے گئے۔

انہوں نے کہا کہ عوام کی امانت یعنی ووٹ میں خیانت ہوئی جو پاکستان کے لیے خوش آئند بات نہیں ہے۔

بات کو جاری رکھتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ انتخابات میں مداخلت کا عمل اور قبل از انتخابات دھاندلی ڈھائی سال پہلے ہی شروع ہوگئی تھی جب وفاقی حکومت نے گلگت بلتستان حکومت کے انتخابات کے اختیارات واپس لے کر انہیں خود فیصلے کرنے سے روک دیا تھا۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *