Categories
Breaking news

وزیرِ اعظم شہبازشریف کا یکم مئی سے لوڈ شیڈنگ مکمل ختم کرنے کا حکم

وزیرِ اعظم شہبازشریف کا یکم مئی سے لوڈ شیڈنگ مکمل ختم کرنے کا حکم

وزیرِ اعظم شہبازشریف نے یکم مئی سے ملک میں لوڈ شیدنگ مکمل ختم کرنے کا حکم دے دیا۔

وزیرِاعظم شہباز شریف کی زیرِصدارت بجلی کی اعلانیہ اور غیر اعلانیہ لوڈ شیدنگ پر ہنگامی اجلاس منعقد ہوا۔

اجلاس میں وفاقی وزیرِ اطلاعات مریم اورنگزیب، سابق وزیرِ اعظم شاہد خاقان عباسی اور متعلقہ اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔

اجلاس کے دوران وزیرِ اعظم کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ ایک سال سے زائد بند پڑے 27 بجلی گھروں میں سے 20 کو فعال کر دیا گیا ہے۔

بریفنگ میں بتایا گیا ہے کہ 20 بجلی گھروں کے دوبارہ چلنے سے بجلی کی پیداوار بڑھی ہے، گزشتہ حکومت نے 4 سال میں بجلی گھروں کے لیے ایندھن نہیں خریدا۔

ملک میں بجلی کی لوڈشیڈنگ بڑھنے پر وزیراعظم شہباز شریف برہم

وزیر اعظم نے کہا کہ عمران حکومت نے بجلی کا ایک نیا یونٹ سسٹم میں شامل نہیں کیا، بروقت ایندھن خریدا گیا نہ کارخانوں کی مرمت کی گئی۔

وزیرِ اعظم شہباز شریف کو بتایا گیا کہ موجودہ حکومت نے 2 ہفتے میں ایندھن کا انتظام کیا ہے، بجلی گھروں سے بجلی کی پیداوار بڑھا کر لوڈ شیڈنگ کا سدِباب بھی کیا جا رہا ہے۔

بریفنگ میں بتایا گیا کہ ملک میں بجلی کی مجموعی پیداوار تقریباً 18500 میگا واٹ ہے، طلب کے لحاظ سے بجلی کی کمی 500 سے 2000 میگا واٹ ہے۔

وزیرِ اعظم کو بریفنگ دی گئی کہ 27 بجلی گھر ایندھن نہ ہونے یا تکنیکی خرابیوں پر بند ہیں۔

بریفنگ میں وزیرِ اعظم کو یہ بھی بتایا گیا کہ لوڈ شیڈنگ کی بڑی وجہ سابق حکومت کا ایندھن کی بر وقت فراہمی کا منصوبہ نہ ہونا ہے۔

وزیرِ اعظم شہباز شریف کو تقسیم کار کمپنیوں کے خسارے میں جانے والے فیڈرز سے متعلق بھی آگاہ کیا گیا۔

وزیرِ اعظم شہباز شریف نے 30 اپریل تک تمام مسائل دور کر کے یکم مئی سے لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کی ہدایات کر دی۔

انہوں نے کہا کہ عوام کو گرمیوں میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ سے مشکلات میں مبتلا نہیں کر سکتے، ایندھن کا مربوط انتظام کریں، مستقل نظام تشکیل دیں، گرمیوں میں آئندہ ماہ کی پیشگی پلاننگ کریں۔

وزیرِ اعظم نے نقصان میں جانے والی بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے فیڈرز کے خسارے ختم کرنے کی طویل مدتی مؤثر منصوبہ بندی بھی طلب کر لی۔

ملک بھر میں بجلی کی لوڈشیڈنگ میں کمی نہ آسکی

ملک بھر میں بجلی کی لوڈشیڈنگ میں کوئی کمی نہ آسکی، کئی کئی گھنٹوں تک بجلی کی بندش نے پنکھے روک دیئے جبکہ شدید گرمی میں سحر و افطار مشکل ہوگیا

فصلوں کی کٹائی کے دوران ڈیزل کی مصنوعی قلت پیدا کرنے کی شکایت پر بھی وزیرِاعظم شہباز شریف نے سخت نوٹس لیا۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ مصنوعی قلت پیدا کرنے والوں کی نشاندہی کریں، ان کے خلاف فوری اور سخت کارروائی کریں، کسانوں کو زرعی مشینری چلانے کے لیے ڈیزل کی بلا تعطل فراہمی یقینی بنائی جائے۔

وزیرِ اعظم میاں شہباز شریف نے یہ بھی کہا کہ دیہی علاقوں میں ضلعی انتظامیہ یقینی بنائے، کسانوں کو ڈیزل کے حصول میں کسی قسم کی مشکلات کا سامنا نہ ہو۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published.