Categories
Breaking news

وزیراعظم شہباز شریف کا اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب

دنیا کو پاکستان کے حالات بتانے آیا ہوں، وزیراعظم شہباز شریف

وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ موسمیاتی تبدیلی سے پاکستان میں آنے والے سیلاب نے تباہی مچادی ہے۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 77ویں اجلاس سے خطاب میں شہباز شریف نے کہا کہ پاکستان کو سیلاب سے تباہی کا سامنا ہے، جس سے 3 کروڑ 30 لاکھ لوگ متاثر ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ موسمیاتی تبدیلی سے آنے والے سیلاب کی تباہی سے ملک کا ایک تہائی حصہ زیر آب آگیا ہے، 650 خواتین نے سیلاب میں بچوں کو جنم دیا۔

وزیراعظم نے مزید کہا کہ 40 دن اور 40 راتیں ایسا سیلاب آیا جیسا دنیا نے کبھی نہیں دیکھا، یہاں سب کو بتانے آیا ہوں کہ پاکستان کن حالات سے گزر رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ابتدائی اندازے کے مطابق 4 ملین ایکڑ فصل تباہ ہوئی ہے، سیلاب سے 11 ملین لوگ سطح غربت سے نیچے چلے جائیں گے۔

شہباز شریف نے کہا کہ کوئی نہیں سمجھ سکتا کہ ہم کس وقت سے گزر رہے ہیں، پریشانی یہ ہے کہ جب کیمرے چلے جائیں گے تو ہم بحران سے نمٹنے کے لیے اکیلے رہ جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ اس بحران سے نمٹنے کےلیے اکیلے رہ جائیں گے، جس کے ذمہ دار ہم نہیں ہیں، عالمی درجہ حرارت میں اضافے کے ایسے اثرات پاکستان نے کبھی نہیں دیکھے۔

وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کا گلوبل وارمنگ میں حصہ نہ ہونے کے برابر ہے لیکن عالمی درجہ حرارت نے پورے پورے خاندانوں کو ایک دوسرے سے الگ کر دیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ گلوبل وارمنگ کی وجہ سے پاکستان اس وقت دنیا کا گرم ترین ملک بن گیا ہے، جو پاکستان میں ہوا ہے وہ پاکستان تک محدود نہیں رہے گا۔

شہباز شریف نے کہا کہ اس لیے دنیا سے موسمیاتی انصاف کی امید لگانا غلط نہ ہوگا، سیکریٹری جنرل یو این اور ان تمام رہنماؤں کا شکریہ جو اس مشکل گھڑی میں ہمارے ساتھ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جس حد تک ممکن ہے اپنے اخراجات سیلاب متاثرین کی مدد کے لیے وقف کیے ہیں، ہمارے پاس فنڈز اور ضروریات کے درمیان فرق بڑھتا جا رہا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ میں آپ سے بات کررہا ہوں، لیکن میرا دل اور دماغ اس وقت بھی پاکستان میں ہے، جو سیلاب سے متاثر ہے۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published.