Categories
Breaking news

نظام میں مداخلت ختم ہو گی تو ملک آگے بڑھے گا: شاہد خاقان عباسی

نظام میں مداخلت ختم ہو گی تو ملک آگے بڑھے گا: شاہد خاقان عباسی

مسلم لیگ نون کے رہنما، سابق وزیرِ اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ جس ملک میں نظام آئین کے مطابق نہ ہو وہ ترقی نہیں کرتا، نظام میں مداخلت ختم ہو گی تو ملک آگے بڑھے گا۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ نون کے رہنما، سابق وزیرِ اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ استعفے اور عدم اعتماد کا آپشن بھی موجود ہے، جسے وقت پر استعمال کیا جائے گا۔

ان کا کہنا ہے کہ استعفے بھی ہمارے پاس ہیں اور عدم اعتماد کا راستہ بھی ہمارے پاس ہے، مگر جب نظام ہی آئین پر مبنی نہ ہو تو کس کے خلاف عدم اعتماد کریں گے۔

’’مشترکہ اجلاس میں بذریعہ فون ووٹ لیا گیا‘‘

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں وزراء اور پی ٹی آئی ارکان کو فون کر کے حاضری اور ووٹ لیا گیا۔

استعفوں کے معاملے پر کوئی اختلاف نہیں، شاہد خاقان عباسی

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ جب تک پوری اپوزیشن استعفے نہیں دیتی اس کا اثر نہیں ہوتا۔

انہوں نے کہا کہ نیب کیسز میں کسی بریت کی درخواست کی ضرورت نہیں، دو آرڈیننس جاری ہوئے جن پر عدالت کو فیصلہ کرنا تھا کہ قانون کا اطلاق ان کیسز پر ہوتا ہے یا نہیں۔

سابق وزیرِ اعظم کا کہنا ہے کہ ہمیں آج تک معلوم نہیں ہو سکا کہ ہمارا جرم کیا ہے، یہ واضح ہے کہ کرپشن نہیں ہے، عدالتوں میں پیشیاں اور سزائیں بھگتنے کو تیار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ چیئرمین نیب بتا دیں کہ ہم نے جرم کیا کیا ہے، نا انصافی کا نظام ہو گا تو کل چیئرمین نیب اور ان کے افسران کو اسی نظام کے تحت ان ہی باتوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔

مسلم لیگ نون کے رہنما نے کہا کہ جو ظلم کرتے ہیں، ان کو جواب دینا پڑتا ہے، ہم پر کرپشن کا الزام نہیں، چیئرمین نیب اور افسران جو سیاسی انجینئرنگ کے جھوٹے کیس کرتے ہیں اس کا جواب انہیں دینا پڑے گا۔

’’صدر بیٹے کی دندان سازی کے معاہدے پر دستخط کر رہے ہیں‘‘

انہوں نے کہا کہ نیب چیئرمین خود ڈیلی ویجز پر ہیں، چیئرمین نیب کی سمری اس صدر کو بھیجی جو داندان سازی معاہدوں پر دستخط کر رہے ہیں۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ صدر کے پاس سمری پر دستخط کا وقت نہیں، وہ اپنے بیٹے کے دندان سازی کے معاہدے پر دستخط کر رہے ہیں، سمری کہاں پر ہے یہ تو بتا دیں۔

یہ بھی پڑھیے

انہوں نے کہا کہ صدر 4 ماہ سے چیئرمین نیب کا فیصلہ نہیں کر سکے، وہ آنکھیں بند کر کے آرڈیننس پر دستخط کرتے رہتے ہیں۔

اس موقع پر سابق وزیرِ اعظم شاہد خاقان عباسی سے ایک صحافی نے سوال کیا کہ زرداری صاحب نے کل کہا ہے کہ پی پی پی پنجاب میں کم بیک کر رہی ہے، میاں صاحب کا ہرجگہ ڈٹ کر مقابلہ کریں گے، تو وہ کس کو پیغام دے رہے ہیں؟

شاہد خاقان عباسی نے جواب دیا کہ زرداری صاحب جس کو بھی پیغام دینا چاہتے ہیں ہمیں نہیں پتہ، ہمیں ان کے ڈٹ کر مقابلہ کرنے سے کوئی خطرہ نہیں، سیاست کرنی ہے تو بالکل ڈٹ کر مقابلہ کریں، حشر وہی ہو گا جو لاہور میں این اے 133 میں ہوا۔

’’فواد چوہدری کی گنتی کمزور ہے‘‘

انہوں نے وفاقی وزیرِ اطلاعات و نشریات پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ فواد چوہدری کی گنتی شاید کمزور ہے، آج ملک پر قرض کا 50 ہزار ارب کا بوجھ ہو گیا ہے۔

نون لیگی رہنما شاہد خاقان عباسی نے مزید کہا کہ مسلم لیگ نون نے جب حکومت چھوڑی تھی تو اس وقت قرضے اور واجبات 28 ہزار ارب روپے تھے۔

ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ 50 ہزار ارب کے قرضوں میں سے 28 ہزار ارب منہا کریں تو 22 ہزار ارب عمران خان اور فواد چوہدری کا قرض کا ملک کو تحفہ ہے۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published.