Categories
Breaking news

نسلہ ٹاور کی تعمیر کے ذمے داران کیخلاف مقدمہ درج

کراچی میں شاہراہ فیصل پر غیر قانونی رہائشی عمارت نسلہ ٹاور کی تعمیر کی اجازت دینے والے سرکاری افسران کے خلاف فیروز آباد تھانے میں مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

ڈپٹی انسپکٹر جنرل پولیس ایسٹ زون مقدس حیدر کے مطابق ایف آئی آر تعزیرات پاکستان کی دفعہ 161، 167، 218، 408، 409، 420، 447 اور 34 درج کی گئی ہے۔

ڈی آئی جی مقدس حیدر کے مطابق ایف آئی آر کی کاپی آج سپریم کورٹ آف پاکستان میں پیش کر دی گئی ہے، مقدمہ کے اندراج کے بعد پولیس کے شعبہ انویسٹی گیشن کا عملہ سرگرم ہو گیا ہے، انہوں نے بتایا کہ ایس ایس پی انویسٹی گیشن ایسٹ کی نگرانی میں پولیس پارٹی نے حسن اسکوائر کے قریب واقع سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے دفتر میں کارروائی کی ہے، دفتر سے کچھ ریکارڈ قبضے میں لیا گیا ہے متعلقہ افسران کے بارے میں پوچھ گچھ کی گئی ہے۔

نسلہ ٹاور گرانے کا کام ایک ہفتے میں مکمل کرنے کا حکم

چیف جسٹس پاکستان جسٹس گلزار احمد نے کمشنر کراچی کو نسلہ ٹاور گرانے کا کام ایک ہفتے میں مکمل کرنے کا حکم دے دیا۔

واضح رہے کہ شاہراہ فیصل پر نسلہ ٹاور کی عمارت غیر قانونی طور پر تعمیر کی گئی تھی ، ایک چھوٹے پلاٹ کے ساتھ سروس روڈ کو ملا کر عمارت تعمیر کی گئی جس کی اجازت سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی سمیت متعلقہ اداروں نے ناصرف اجازت نامے دیے بلکہ اس غیر قانونی عمل کے خلاف کوئی کارروائی بھی نہیں کی گئی۔

نسلہ ٹاور معاملہ: مقدمے کیلئے باقاعدہ حکمنامہ موصول نہیں ہوا، پولیس حکام

سپریم کورٹ کے نسلہ ٹاور کے ذمےداران کے خلاف مقدمے کے فیصلے پر پولیس حکام نے جیو نیوز کو بتایا ہے کہ تاحال باقاعدہ حکمنامہ موصول نہیں ہوا، اس کے ملنے پر مقدمہ درج کیا جائے گا۔

اب سپریم کورٹ کی حکم سے عمارت مسمار کی جا رہی ہے جبکہ متعلقہ افسران کے خلاف کاروائی بھی عمل میں لائی جا رہی ہے۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published.