Categories
Breaking news

میڈرڈ علاقائی کورونا اقدامات کے حوالے سے قانون میں تبدیلی ضروری قرار

میڈرڈ (محمد نبی) ہسپانوی حکومت نے عندیہ دیا ہے کہ سپریم کورٹ کے علاقائی کورونا اقدامات ویٹو کرنے کی صورت میں قانون میں تبدیلی ناگزیر ہوگی۔ حکومت کا خیال ہے کورونا کا بد ترین دور اب گزر چکا ہے۔ ایسے میں اسٹیٹ آف الارم کو برقرار رکھنے کی ضرورت نہیں۔ اسٹیٹ آف الارم نے صوبوں کو سخت قانونی پابندیاں نافذ کرنے کا قانونی جواز مہیا کیا تھا۔ اس کے ختم ہونے کی صورت میں جن پابندیوں سے بنیادی حقوق جن میں نقل و حرکت کی آزادی شامل ہے، کے ضائع ہونے کا خدشہ ہوگا اور سپریم کورٹ ایسی پابندیوں پر ایکشن لے سکتی ہے۔

علاقائی سربراہان نے شکایت کی ہے کہ اسٹیٹ آف الارم ختم ہونے پر وہ کورونا وبا کو قابو میں رکھنے کے لیے ضروری اقدامات کرنے سے قاصر رہیں گے۔ ان کے پاس اپنے حالات کے مطابق فیصلوں پر عدالت روک لگا سکتی ہے۔

پیر کے روز ہسپانوی وزیر انصاف جوان کارلوس نے ایک آرٹیکل میں لکھا کہ موجودہ ویکسی نیشن مہم اور اسپین میں وبا کی صورتحال کے پیش نظر اسٹیٹ آف الارم اٹھایا گیا۔ ان کے خیال میں یہ ایک خوش آئند اقدام تھا۔ اسپین میں کورونا کی تین لہریں آئیں جہاں اموات کی تعداد 78,000 تک پہنچ گئی ہے۔ اسپین میں اب بھی ایک ہفتے میں 600 اموات ہو رہی ہیں۔ علاؤہ ازیں میڈرڈ، کاتالونیا اور باسکے کنٹری میں انتہائی نگہداشت کے یونٹس پر دباؤ بڑھتا جا رہا ہے۔ ان علاقوں میں مسلسل کیسز کی شرح انتہائی خطرناک حد تک بڑھ چکی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *