Categories
Breaking news

لوڈ شیڈنگ میں اضافے پر چیئرمین نیپرا برہم

لوڈ شیڈنگ میں اضافے پر چیئرمین نیپرا برہم

نیپرا میں فی یونٹ بجلی 3 روپے 15 پیسے مہنگی کرنے کی درخواست کی سماعت کے دوران ملک بھر میں لوڈ شیڈنگ میں اضافے پر چیئرمین نیپرا نے نیشنل پاور کنٹرول سینٹر کے حکام پر اظہارِ برہمی کیا ہے۔

سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی (سی پی پی اے) کی درخواست پر چیئرمین نیپرا کی زیرِ صدارت سماعت ہوئی۔

سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی نے فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں درخواست کر رکھی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ مارچ میں 10 ارب یونٹ سے زائد بجلی پیدا کی گئی، پانی سے 16.35 فیصد، کوئلے سے 24.83 فیصد، مہنگے فرنس آئل سے 10.62 فیصد بجلی پیدا کی گئی۔

نیپرا نے بجلی پھر مہنگی کردی

نیپرا نے بجلی ایک بار پھر مہنگی کردی، جنوری کی فیول ایڈجسٹمنٹ میں فی یونٹ بجلی 5 روپے 94 پیسے مہنگی کرنے کی منظوری دی گئی ہے۔

سی پی پی اے کے مطابق مقامی گیس سے 9.53، درآمدی ایل این جی سے 18.87 فیصد اور جوہری ایندھن سے 15.01 فیصد بجلی پیدا کی گئی۔

نیپرا کی سماعت کے دوران بجلی کی لوڈشیڈنگ کا معاملہ بھی زیرِ غور آیا۔

چیئرمین نیپرا نے استفسار کیا کہ کیا وجہ ہے کہ بجلی کی لوڈشیڈنگ بڑھ گئی ہے؟

نیشنل پاور کنٹرول سینٹر کے حکام نے جواب دیا کہ گرمی زیادہ بڑھ گئی ہے۔

نیپرا حکام نے استفسار کیا کہ پاور پلانٹس کے لیے فیول کا انتظام کیوں نہیں کیا گیا؟

نیشنل پاور کنٹرول سینٹر (این پی سی سی) کے حکام نے جواب دیا کہ گرمی بڑھنے سے بجلی کی طلب میں اضافہ ہوا۔

چیئرمین نیپرا نے کہا کہ یہ کوئی جواز نہیں، دنیا اتنی ترقی کر گئی ہے، 3 ماہ بعد کے موسم کی پیشگوئی بھی آج با آسانی مل جاتی ہے۔

نیشنل پاور کنٹرول سینٹر کے حکام نے کہا کہ محکمۂ موسمیات سے بھی پیش گوئی درست نہیں دی جاتی۔

وائس چیئرمین نیپرا نے اظہارِ برہمی کرتے ہوئے کہا کہ یہ کیسا جواب ہے، ہم 1970ء میں نہیں بیٹھے ہوئے۔

نیپرا نے بجلی 3 روپے 9 پیسے مہنگی کر دی

نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) نے فی یونٹ بجلی 3 روپے 9 پیسے مہنگی کردی اور اس اضافے کا نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا۔

وائس چیئرمین نیپرا رفیق شیخ نے کہا کہ آپ کو موسم کی پیش گوئی کا معلوم نہیں ہوتا؟ عوام پس رہے ہیں۔

چیئرمین نیپرا نے این پی سی سی اور سی پی پی اے کو ہدایت کی کہ بجلی کی صورتِ حال بہتر بنائیں۔

نیپرا حکام کے مطابق مارچ کی فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں فی یونٹ بجلی 2 روپے 86 پیسے تک بڑھے گی، جس کی حتمی منظوری پر صارفین پر 28 ارب 90 کروڑ روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا۔

ڈسکوز کے فیول چارجز ایڈجسٹمنٹ کی سماعت مکمل

ڈسکوز کے مارچ کے ماہانہ فیول چارجز ایڈجسٹمنٹ کی نیپرا ہیڈکوارٹر میں سماعت مکمل ہو گئی۔

نیپرا حکام کے مطابق ڈیٹا کی ابتدائی جانچ پڑتال کے مطابق اضافہ 2 روپے 87 پیسے بنتا ہے، اس سے قبل صارفین سے فروری کے ایف سی اے 4 روپے 85 پیسے چارج کیے گئے تھے، مارچ کا ایف سی اے فروری کی نسبت 1 روپے 98 پیسے مئی میں کم چارج کیا جائے گا، فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کا اطلاق ڈسکوز کے لائف لائن کے سوا تمام صارفین پر ہو گا، اس کا اطلاق کے الیکٹرک صارفین پر بھی نہیں ہو گا، اتھارٹی ڈیٹا کی مزید جانچ پڑتال کے بعد اپنا تفصیلی فیصلہ جاری کرے گی۔

کے الیکٹرک کی فیول چارجز ایڈجسٹمنٹ کی سماعت

نیپرا میں کے الیکٹرک کی مارچ کی فیول چارجز ایڈجسٹمنٹ کی سماعت ہوئی۔

نیپرا حکام نے بتایا کہ کے الیکٹرک نے فی یونٹ بجلی میں 5 روپے 27 پیسے اضافہ مانگا ہے۔

چیئرمین نیپرا نے استفسار کیا کہ کے الیکٹرک کو مارچ میں کتنی گیس ملی؟

کے الیکٹرک حکام نے جواب دیا کہ ہمیں یومیہ 19 کروڑ مکعب فٹ طلب کے برعکس 8 کروڑ 60 کروڑ مکعب فٹ گیس دی گئی۔

نیپرا حکام نے بتایا کہ کے الیکٹرک کے لیے مارچ کی فیول ایڈجسٹمنٹ کے تحت فی یونٹ 4 روپے 83 پیسے اضافہ بنتا ہے، اس پر حتمی فیصلہ بعد میں کیا جائے گا، کےالیکٹرک نے بعض پاور پلانٹس سے استعداد سے کم بجلی پیدا کی، ورکنگ کے مطابق کے الیکٹرک کا اضافہ 4 روپے 83 پیسے بنتا ہے، اتھارٹی مزید جانچ پڑتال کے بعد حتمی فیصلہ جاری کرے گی۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published.