Categories
Breaking news

لندن میں بیٹھ کر ایک شخص بیرون ملک کے ساتھ مل کر سازش کی، عمران خان

لندن میں بیٹھ کر ایک شخص نے بیرون ملک کے ساتھ مل کر سازش کی، عمران خان

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی ) کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ لندن میں بیٹھ کر ایک شخص نے بیرون ملک کے ساتھ مل کر سازش کی، سازش میں شہباز شریف اور زرداری بھی ملوث ہیں۔ سپریم کورٹ معاملے کی تحقیقات کروائے، جنوری سے یہ گیم شروع ہوئی، سازش سے متعلق خبریں مل رہی تھیں۔

عمران خان نے اسلام آباد کی طرف مارچ کے لیے کارکنوں کو تیاری کرنے کی ہدایت کردی۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ مارچ کی تاریخ کا اعلان بعد میں کروں گا۔

عمران خان نے کہا کہ چیف الیکشن کمشنر جانبدار ہیں، الیکشن کمشنر کو استعفیٰ دینا چاہیے، ہمیں عدلیہ پر اعتماد رکھنا چاہیے۔

سابق وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ نیشنل سیکیورٹی کونسل (این ایس سی) نے کنفرم کیا کہ مراسلہ درست تھا، پاکستانی سفیر سے جو گفتگو کی گئی وہ حقیقت تھی۔

عمران خان نے کہا کہ مراسلے میں بائیڈن انتظامیہ کی طرف سے جو زبان استعمال کی گئی اس میں تکبر تھا، ملک کے وزیر اعظم کو دھمکی دی گئی۔

عمران خان قومی سلامتی کمیٹی اجلاس پر اپنا مؤقف دیں گے، ذرائع

ذرائع کا کہنا ہے کہ قومی سلامتی کمیٹی کے نئےاعلامیہ میں پی ٹی آئی کے مؤقف کی تصدیق کی گئی، نئے اعلامیہ میں بھی پاکستان میں مداخلت کی بھی تصدیق ہوئی۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ میں نے مراسلے سے متعلق جو کچھ کہا، وہ سچ ثابت ہوا، ہماری حکومت جانے کے بعد ملک میں افرا تفری پھیلی ہوئی ہے اور معیشت نیچے جا رہی ہے۔

عمران خان نے کہا کہ این ایس سی نے کنفرم کردیا ہے کہ بیرونی مداخلت ہوئی ہے، لندن میں بیٹھ کر ایک شخص نے سازش کی ان کے ساتھ شہباز شریف اور زردای ملے ہوئے تھے، جو لوگ منحرف ہوئے وہ کیسے سفارتکاروں سے مل رہے تھے؟

انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ انجانے میں اس سازش کا حصہ بنے، لندن میں جو بیٹھا تھا وہ اس سازش کا حصہ تھا، اتحادیوں نے چھوڑ دیا، ہمارے ارکان کو بھی ساتھ ملا لیا۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ کبھی سفارتی سطح پر ایسی زبان استعمال نہیں کی جاتی، ایک بار بھٹو اور ایک بار مشرف کو دھمکی ملی تھی، ایسی دھمکیاں نہیں ملا کرتیں، جو سازش کی گئی ملک میں اس سے بڑی سازش نہیں کی گئی۔

عمران خان نے کہا کہ ثابت ہوگیا مراسلے پر سچ کہہ رہا تھا اب شہباز شریف کم از کم معافی تو مانگیں۔

انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کو اس کی تحقیقات کرنی چاہیے تھی، سپریم کورٹ مراسلے کی کھلی عدالت میں تحقیقات کرے، اگر آپ نے تحقیقات نہیں کیں تو مستقبل میں کوئی وزیر اعظم ملکی مفاد کے لیے کھڑا نہیں ہوگا۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ بیرونی مداخلت کی ہم نے بھاری قیمت ادا کی ہے، ہمارے اداروں کی ملکی خود مختاری کے لیے کھڑا ہونا پڑے گا۔

اس سے قبل سابق وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت ہونے والا تحریک انصاف کی سیاسی کمیٹی کا اجلاس ہوا، جس میں گزشتہ روز قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس سے متعلق معاملات کا جائزہ لیا گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ قومی سلامتی کمیٹی کے نئے اعلامیہ میں پی ٹی آئی کے مؤقف کی تصدیق کی گئی، نئے اعلامیہ میں بھی پاکستان میں مداخلت کی بھی تصدیق ہوئی۔

عمران خان نے کہا کہ قوم کسی صورت امریکی غلامی قبول نہیں کرے گی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس میں چیف الیکشن کمشنر کے مبینہ جانبدارانہ رویے پر بھی گفتگو کی گئی۔

ذرائع کے مطابق عمران خان نے اسلام آباد میں پاور شو کے لیے بھرپور تیاری کی ہدایت کر دی۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published.