Categories
Breaking news

عمران خان تعصب کی سیاست نہیں کرتے، اسد عمر

عمران خان تعصب کی سیاست نہیں کرتے، اسد عمر

وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے کہا ہے کہ سندھ کے ساتھ کوئی امتیازی سلوک نہیں کیا جارہا ہے، عمران خان تعصب کی سیاست نہیں کرتے۔

کراچی میں میڈیا سے گفتگو میں اسد عمر نے کہا کہ وفاق سندھ کے عوام کے لیے رقم خرچ کرے گی، حکومت سندھ کے لیے نہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کو وفاق کے جواب سے زیادہ سیاسی بیان دینے کی جلدی تھی، عمران خان نے سندھ میں 2 تاریخی پیکیجز کا اعلان کیا۔

وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ وفاقی سے پہلے جو پیسا سندھ گیا، اس سے سرے محل بنے، ڈائمنڈ کے نیکلس بنے، دبئی میں ٹاور کھڑے ہوئے اور فرانس میں جائیدادیں بنائی گئیں۔

ان کا کہنا تھا کہ وفاق کا دیا ہوا پیسا سندھ میں نہیں لگا، پیپلز پارٹی این ایچ اے پر وفاق سے سوال پوچھ رہی ہے، پیپلز پارٹی نے موٹر ویز بنانے پر ایک روپیا خرچ نہیں کیا۔

اسد عمر نے یہ بھی کہا کہ 2018 سے پہلے کے 3 سال کے وفاق کی جانب سے سندھ کے منصوبوں کے لیے رقم دیکھ لیں، ہماری حکومت کے 3 سالوں میں سندھ کے منصوبوں کے لیے 32 فیصد زائد رقم رکھی گئی۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان وہ وزیر اعظم ہیں، جنہوں نے سندھ کے لیے تاریخی پیکیج کا اعلان کیا، کراچی کے نالوں پر اربوں روپے خرچ کیے جارہے ہیں، گرین لائن منصوبہ ستمبر تک مکمل ہونے جارہا ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ ساڑھے 6 ارب روپے سکھر الیکٹرک پاور کمپنی کے منصوبے کے لیے رکھے گئے، حیسکو کے منصوبوں کے لیے 5 ارب روپے رکھے گئے، سندھ کی جامعات کے لیے 8 ارب کی رقم رکھی گئی۔

اُن کا کہنا تھا کہ ملتان سکھر موٹروے منصوبے کو ہم نے مکمل کیا، 98 ارب روپے ادا کیے، سکھر حیدرآباد موٹر وے منصوبے کی منظوری ہوگئی ہے، جس پر 200 ارب روپے خرچ کیے جائیں گے۔

اسد عمر نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے موٹر ویز بنانے پر ایک روپیہ خرچ نہیں کیا اور این ایچ اے پر ہم سے سوال پوچھ رہی ہے، عمران خان تعصب کی سیاست نہیں کرتے، صوبائی حکومت سندھ کارڈ استعمال کر رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ ہمارے لیے سندھ میں مشکلات پیدا کرنے کی کوشش کرتے ہیں، وزیراعلیٰ صاحب آپ سندھ کی حکومت ضرور ہیں سندھ کی عوام نہیں، عمران خان نے سندھ میں دو تاریخی پیکیج کا اعلان کیا، شہری اور دیہی علاقوں کو کور کیا۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *