Categories
Breaking news

عمان میں بھی شہریت کا حصول ہوا ممکن، حکام نے غیر ملکیوں کو بڑی خوشخبری سنا دی

Advertisement
Advertisement

عمان  شہریت

عمان میں شہریت کے حصول سے متعلق رائج قانون پر عمل کرکے مقامی اور غیرملکی شخص عمانی شہریت حاصل کرسکتا ہے، مذکورہ قانون میں مختلف قوائد وضوابط طے کیے گئے ہیں۔

عمان میں شہریت سے متعلق قانون میں 14 آرٹیکلز ہیں جن میں کئ آرٹیکلز کے مزید ذیلی اصول بھی رکھے گئے ہیں اور شہریت کے حصول کے لیے تمام مراحل کو عبور کرنا لازمی ہوگا۔

عمامی شہریت قانون’ میں ناصرف شہریت کے حصول کے لیے قوائد وضوابط طے کیے گئے ہیں بلکہ ان پہلوؤں پر بھی تنبیہ کی گئی ہے جس کے تحت کسی بھی شخص کی شہریت منسوخ ہوسکتی ہے۔

قانون میں آرٹیکل 2 اور 13 کافی اہم ہے کیوں کہ دوسرے آرٹیکل میں غیرملکیوں کے لیے قوائط وضوابط بتائے گئے ہیں کہ وہ کیسے عمانی شہریت حاصل کرسکتے ہیں۔ جبکہ آرٹیکل 13 میں ان عوامل کی طرف نشان دہی کی گئی ہے جس کے باعث آپ کی شہریت منسوخ یا ختم کردی جائے گی۔

آرٹیکل نمبر 1 میں پانچ نکات شامل ہیں، پہلے نکتے میں کہا گیا ہے کہ اس شخص کو عمانی شہریت دی جائے گی جو عمان یا پھر کسی بھی ملک میں پیدا ہوا ہو لیکن اس کا والد عمانی ہونا لازمی ہے۔

دوسرے نکتے کے مطابق اگر کوئی شخص عمان یا پھر دوسرے ملک میں پیدا ہوا ہوا لیکن اس کی والدہ عمانی ہو اسے بھی شہریت دے دی جائے گی اس کے لیے ضروری نہیں کہ وہ اپنے والد کی شناخت کو ثابت کرے۔ اسی طرح اگر کسی کے والد کی شہریت ختم ہوگئی ہو تو بچے کو شہریت کے حصول میں کوئی رکاوٹ نہیں آئے گی۔

تیسرا نکتہ ہے کہ اسے بھی شہریت دے دی جائے گی جو عمان میں پیدا ہوا ہو لیکن اسے والدین کا پتا نہ ہو۔

چوتھے نکتے کے تحت کوئی بھی شخص عمان میں پیدا ہو اور رہائش کا مسکن بھی اسی ملک کو بنایا ہو لیکن مذکورہ شہری کی پیدائش کے وقت والد کی شہریت ختم ہوگئی ہو تو ایسے فرد کو بھی شہریت مل سکتی ہے۔

عمانی شہریت قانون سے متعلق دیگر آرٹیکلز اور مکمل تفصیلات اس لنک سے حاصل کریں۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *