Categories
Breaking news

طویل انتظار کے بعد رویت ہلال کمیٹی نے اعلان کرہی دیا، کل عید ہے یا نہیں؟ سب سے بڑی خبر آگئی

طویل انتظار کے بعد رویت ہلال کمیٹی نے اعلان کرہی دیا، کل عید ہے یا نہیں؟ سب سے بڑی خبر آگئی

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) مرکزی رویت ہلال کمیٹی نے عید الفطر کے چاند کی رویت کا اعلان کردیا۔ کل بروز جمعرات یکم شوال المکرم ہوگی۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق مرکزی رویت ہلال کمیٹی کی جانب سے عیدالفطر کا چاند نظر آنے کا اعلان کردیا گیا ہے۔ رویت ہلال کمیٹی طویل ترین اجلاس کے بعد اس فیصلے پر پہنچی ہے کہ چاند کی شہادتیں درست ہیں اس لیے کل عیدالفطر منائی جائے گی۔واضح رہے کہ چاند کی رویت کی شہادتیں خیبرپختونخوا اور بلوچستان سے موصول ہوئی ہیں۔ پنجاب، سندھ اور اسلام آباد سے چاند دیکھنے کی کوئی گواہی نہیں آئی۔ مرکزی رویت ہلال کمیٹی نے کئی گھنٹوں کی تصدیق کے بعد ڈیڑھ درجن کے قریب شہادتوں کو درست قرار دیا ہے۔

مسجد اقصیٰ پرحملہ اورفلسطینیوں پر مظالم ، مزاحمتی تحریک ’حماس‘ کی اسرائیل کےخلاف جوابی کارروائی ، 130 میزائل داغ دیئے

مرکزی رویت ہلال کمیٹی کا اجلاس چیئرمین مولانا عبدالخبیر آزاد کی زیر صدارت اسلام آباد میں ہوا جس میں مختلف مکاتب فکر کے علما، محکمہ موسمیات کے ماہرین اور میڈیا کے نمائندے موجود تھے۔ رویت ہلال کمیٹی کا اجلاس غیر متوقع طور پر ضرورت سے زیادہ طویل ہوا اور کافی دیر کے بعد چاند کی رویت کا اعلان کیا گیا۔ تاخیر کی بنیادی وجہ دور دراز علاقوں سے موصول ہونے والی شہادتیں اور ان کی تصدیق میں پیش آنے والی مشکلات تھیں۔

مرکزی رویت ہلال کمیٹی نے تقریباً پہلی بار پشاور کی مسجد قاسم خان میں چاند دیکھنے والے مفتی شہاب الدین پوپلزئی کے ساتھ تعاون کیا۔ مفتی شہاب الدین پوپلزئی کی جانب سے مسجد قاسم خان میں موصول ہونے والی شہادتوں کے بارے میں مرکزی رویت ہلال کمیٹی کو آگاہ کیا گیا تاہم انہوں نے مرکزی رویت ہلال کمیٹی کے اعلان کا انتظار کیے بغیر ہی خود ہی عید کا اعلان کردیا۔

کراچی میں اعتکاف پر بیٹھےافراد کے موبائل فون چوری ہوگئے، ویڈیو بھی سامنے آگئی

مرکزی رویت ہلال کمیٹی کی جانب سے مسجد قاسم خان میں آنے والے گواہان سے رابطہ کیا گیا اور چاند کی رویت کی تصدیق کی گئی۔ اس کے علاوہ پشاور کی زونل رویت ہلال کمیٹی میں آنے والے گواہان کی شہادتوں کی بھی تصدیق کی گئی جس کے باعث چاند کی رویت کے حوالے سے اعلان میں حد سے زیادہ تاخیر ہوتی چلی گئی۔

مزید :

Breaking Newsاہم خبریںقومیماحولیات

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *