Categories
Breaking news

ضرورت پڑی تو ہراساں کرنے والے کو سامنے لاؤں گی: عائشہ عمر

Advertisement
Advertisement

پاکستان فلم و ٹی وی انڈسڑی کی مقبول ترین اداکارہ عائشہ عمر کا کہنا ہے کہ جب ضرورت ہوگی ہراساں کرنے والے شخص کا نام سامنے لاؤں گی۔اپنے حالیہ انٹرویو میں عائشہ عمر نے انکشاف کیا کہ انہیں جنسی ہراسانی کے واقعات سامنے لانے کی قیمت ادا کرنی پڑی اور انہوں نے اس کی وجہ سے بہت کچھ کھویا۔عائشہ عمرکے مطابق ’جنسی ہراسانی کا واقعہ سامنے لانے کے بعد ایک بہت بڑے برانڈ نے انہیں اس وقت کام دینے سے انکار کیا جب انہوں نے ہراساں کرنے والے شخص کا نام لینے سے انکار کیا۔‘اداکارہ نے بتایا کہ برانڈ نے ان سے کہا کہ اگر وہ جنسی ہراساں کرنے والے شخص کا نام نہیں بتاتیں تو وہ ان کے ساتھ کام نہیں کر سکتے۔
عائشہ عمر نے بتایا کہ انہوں نے ہراساں کرنے والے شخص کا نام نہیں لیا، کیونکہ ابھی وہ اس شخص کا نام نہیں لینا چاہتیں اور جب وہ سمجھیں گی کہ اس شخص کا نام لینا چاہیے تو وہ خود ہی دنیا کو بتا دیں گی لیکن ابھی ان کے خیال میں ان کا نام لینا درست نہیں۔عائشہ عمر نے انڈسٹری میں ہراساں کیے جانے کے حوالے سے انکشاف کیا تھا کہ انڈسٹری میں عمر سے دُگنا طاقتور شخص ہراساں کرتا رہا ہے جس کا ذکر انہوں نے 15 برس تک کسی سے نہیں کیا۔عائشہ عمر کا کہنا تھا کہ جب انہوں نے انڈسٹری میں قدم رکھا تو اس وقت اُن کی عمر 23 سال تھی، اُس وقت میری عمر سے دُگنے طاقتور آدمی نے مجھے جنسی ہراسانی کا نشانہ بنایا اور یہ سلسلہ برسوں تک چلتا رہا۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *