Categories
Breaking news

شہباز شریف اپنے ساتھ ہوئے سلوک پر عدالت میں بول پڑے

لاہور کی احتساب عدالت میں منی لانڈرنگ ریفرنس کی سماعت کے دوران مسلم لیگ نون کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائدِ حزبِ اختلاف میاں شہباز شریف اپنے ساتھ ہونے والے سلوک پر بول پڑے۔

شہباز شریف نے عدالت میں روسٹرم پر آ کر بیان دینے کی درخواست کی جس پر احتساب عدالت لاہور کے جج جواد الحسن نے انہیں روسٹرم پر آکر بولنے کی اجازت دے دی۔

شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز اشتہاری قرار

لاہور کی احتساب عدالت نے مسلم لیگ نون کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائدِ حزبِ اختلاف میاں شہباز شریف، ان کے صاحبزادے اور پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز اور دیگر اہلِ خانہ کے خلاف منی لانڈرنگ ریفرنس کی سماعت کے دوران شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز کو اشتہاری قرار دے دیا۔

شہباز شریف نے روسٹرم پر اپنے بیان میں کہا کہ مجھے آج تک میڈیکل رپورٹس اور فزیو تھیراپسٹ فراہم نہیں کیا گیا، میں نے بطور وزیرِ اعلیٰ پنجاب 3 بار کام کیا، جس کی کبھی حکومت سے تنخواہ نہیں لی، نہ کبھی کوئی الاؤنس لیا، کبھی پیٹرول کے پیسے بھی سرکاری خزانے سے نہیں لیے۔

انہوں نے کہا کہ میں نے پنجاب کے عوام کی دل سے خدمت کی ہے ، میں نے کبھی کرپشن نہیں کی، نہ کبھی قوم کا پیسہ کھایا، اللّٰہ تعالیٰ کے دیئے گئے وسائل میں رہتے ہوئے عوام کی خدمت کی۔

یہ بھی پڑھیے

شہباز شریف نے یہ بھی کہا کہ کینسر کا مریض ہوں میرے علاج پر بہت پیسہ خرچ ہوا، مگر کبھی عوامی خزانے سے پیسے نہیں لیے، اپنی جیب سے پیسے لگائے۔

شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی پیشی کے موقع پر لاہور کی احتساب عدالت کے اطراف میں سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیئے گئے تھے۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *