Categories
Breaking news

شہباز اور حمزہ کیخلاف سماعت دوپہر تک ملتوی

شہباز اور حمزہ کیخلاف سماعت دوپہر تک ملتوی

لاہور کی بینکنگ کورٹ نے منی لانڈرنگ کیس کی سماعت کے دوران مسلم لیگ نون کے صدر، قومی اسمبلی میں قائدِ حزبِ اختلاف میاں شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز کو حاضری کے بعد واپس جانے کی اجازت دے دی جبکہ کیس کی سماعت دوپہر تک ملتوی کر دی۔

دورانِ سماعت شہباز شریف اور حمزہ شہباز نے عدالت میں پیش ہو کر حاضری مکمل کرائی۔

شہباز شریف نے استدعا کی کہ عدالت کی اجازت سے کچھ کہنا چاہتا ہوں۔

فاضل جج نے کہا کہ اجازت ہے، کیا کہنا ہے آپ نے؟

شہباز شریف نے کہا کہ ایف آئی اے نے چالان پیش کر دیا، مجھے یقین ہے کہ آپ نے چالان کا جائزہ لیا ہو گا۔

فاضل جج نے کہا کہ آپ لوگوں کی معاونت سے ہی عدالت آگے چلے گی۔

شہباز شریف نے کہا کہ میرےخلاف اس چالان میں کچھ نہیں ہے۔

فاضل جج نے شہباز شریف سے سوال کیا کہ آپ بحث کر رہے ہیں۔

شہباز شریف نے کہا کہ میں بحث نہیں کر رہا، بتا رہا ہوں۔

فاضل جج نے کہا کہ آپ کی بات بعد میں سن لیں گے۔

لاہور کی بینکنگ کورٹ نے شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز کو حاضری کے بعد واپس جانے کی اجازت دے دی۔

دورانِ سماعت شہباز شریف اور حمزہ شہباز کے وکیل امجد پرویز عدایت میں پیش نہ ہوئے۔

عطاء تارڑ نے عدالت سے استدعا کی کہ امجد پرویز احتساب عدالت میں مصروف ہیں، لہٰذا عدالت درخواستِ ضمانت میں تاریخ دے۔

عطاء تارڑ نے یہ بھی استدعا کی کہ عدالتی دائرہ اختیار پر بحث کے لیےعدالت آج کا کوئی وقت مقرر کر دے۔

فاضل جج نے سوال کیا کہ آپ کے وکیل کس وقت عدالت میں موجود ہوں گے، وقت بھی آپ ہی بتا دیں۔

عطاء تارڑ نے بتایا کہ شہباز شریف اور حمزہ شہباز کے وکیل 12 بجے تک عدالت پیش ہو جائیں گے۔

عدالت نے کیس کی سماعت دوپہر 12 بجے تک ملتوی کر دی۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published.