Categories
Breaking news

سپریم کورٹ نے کراچی میں ناسلا ٹاور کو خالی کرنے کا نوٹس جاری کر دیا

Advertisement
Advertisement

 ناسلا ٹاور

شہر قائد کے علاقے شاہراہ قائدین میں قائم گیارہ منزلہ ناسلا ٹاور کو خالی کرنے کا نوٹس جاری کردیا گیا۔

سپریم کورٹ میں سماعت کے بعد سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے شاہراہ قائدین پر قائم گیارہ منزلہ ناسلا ٹاور کو خالی کرنے کا نوٹس جاری کردیا۔

سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کا کہنا ہے کہ مالک اور مکین سات دن کے اندر عمارت خالی کریں۔

نوٹس بلڈنگ کنٹرول ایسٹ کے ڈپٹی ڈائریکٹر نے جاری کیا جس میں کہا گیا ہے کہ عمارت کو بغیر کسی تکمیلی منصوبہ حاصل کے لیے آباد کیا گیا۔

ناسلا ٹاور کے رہائشی کا کہنا ہے کہ عدالت نے بلڈنگ گرانے کا حکم دیا ہے اگر یہ گھر والوں کو بتادوں کو وہ جیتے جی مر جائیں گے، یہ نالے پر نہیں بنا یہاں بنگلہ ہوا کرتا تھا، بلڈر کے پاس تمام ثبوت موجود ہیں۔

واضح رہے کہ اس سے قبل چیف جسٹس گلزار احمد نے کراچی میں شاہراہ قائدین پر قائم ٹاور گرانے کا حکم دیا تھا، عدالت نے ریمارکس دیئے تھے کہ پوری بلڈنگ ہی نالے پر کھڑی ہے۔

انہوں نے ڈی جی ایس بی سی اے کی سرزنش کی اور کہا کہ ایس بی سی اے والے خود ملے ہوئے ہیں، کل آپ سپریم کورٹ کی عمارت کسی کو دے دیں گے۔

چیف جسٹس گلزار احمد نے کمشنر کراچی کی جانب سےڈپٹی کمشنر کی رپورٹ پیش کرنے پر بھی برہمی کا اظہار کیا انہوں نے کہا کہ کمشنر کراچی کو فارغ کریں، انہیں تو کچھ معلوم ہی نہیں، ہمارا آرڈر کیا تھا اور یہ کیا بتا رہے ہیں۔

عدالت نے ہل پارک تجاوزات کیس میں مکینوں کی فریقین بننے کی درخواست مسترد کردی۔ چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ جنہوں نے گھر خریدے وہ اتنے معصوم نہیں، جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیے کہ معاوضہ الگ معاملہ ہے، پہلے جگہ خالی ہونی چاہیے۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *