Categories
Breaking news

سندھ اسمبلی: 18سال میں لازمی شادی، قانون ایجنڈے میں شامل

سندھ اسمبلی: 18سال میں لازمی شادی، قانون ایجنڈے میں شامل

صوبہ سندھ میں 18 سال کی عمر کے نوجوانوں کی لازمی شادی کرانے کا ایکٹ سندھ اسمبلی کے آج کے ایجنڈے میں شامل ہے۔

لازمی شادی ایکٹ کا نجی بل جماعتِ اسلامی کے رکنِ اسمبلی سید عبدالرشید نے جمع کرایا تھا۔

سندھ میں 18سال سے زائد عمر کے افراد کی شادی نہ کرانے پر والدین پر جرمانے کی تجویز

کراچی (نیوزڈیسک )متحدہ مجلس عمل (ایم ایم ایم) کے رکنِ…

سید عبدالرشید کے جمع کرائےگئے ایکٹ میں کہا گیا ہے کہ 18 سال کے بچوں کی شادی نہ کرانے پر والدین پر جرمانہ عائد کیا جائے۔

بل میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ 18 سال کے بچوں کی شادی نہ کرنے پر والدین کو تحریری ٹھوس جواز دینا ہو گا۔

18 سال کے نوجوانوں کی شادی کے سوال پر فردوس عاشق اعوان کا دلچسپ جواب

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ لگتا ہے سندھ حکومت نے نوجوانوں کے جذبات اور احساسات کی پاسداری کرتے ہوئے اس قانون سازی کا فیصلہ کیا ہے۔

پاکستان پیپلز پارٹی نے لازمی شادی ایکٹ کے زیرِ غور قانون کی مخالفت کی تھی۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *