Categories
Breaking news

سعد رفیق نے مسلم لیگ ن کا ساتھ چھوڑ دیا؟ تہلکہ خیز خبرآگئی

Advertisement

سعد رفیق نے مسلم لیگ ن کا ساتھ چھوڑ دیا؟ تہلکہ خیز خبرآگئی

لندن (ڈیلی پاکستان آن لائن) مقامی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ نوازشریف کی اسٹیبلشمنٹ کے خلاف تازہ پوزیشن کے بعد لاہور کے مسلم لیگ ن کے ایک رہنماء نے پارٹی چھوڑ دی اور کہاہے کہ مسلم لیگ ن کے قائد نے ہی چند ماہ قبل پارٹی رہنمائوں کو آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے لیے ووٹ دینے کی اجازت دی تھی اور اب مختلف موقف اپنالیا۔ ذرائع نے بتایا کہ پارٹی سے راہیں جدا کرنیوالے یہ رہنما سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق ہیں ۔ یاد رہے کہ جیل سے رہائی کے بعد ان کی سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الٰہی سے ملاقات بھی ہوئی تھی جس دوران پرویز الٰہی نے انہیں رہائی کی مبارکباد بھی دی تھی ۔

Advertisement

بنگلہ دیش کے سابق کرکٹر سجیب الاسلام نے مبینہ طور پر خودکشی کرلی

انگریز ی جریدے دی نیوز کے مطابق نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر مسلم لیگ ن کے ایک رہنماء نے بتایا کہ پارٹی کے زیادہ تر رہنماء ، نوازشریف کے تازہ اسٹیبلشمنٹ مخالف موقف کی تائید نہیں کرتے ، کئی پارٹی رہنماء حیران پریشان ہوگئے جب انہوں نے دیکھا کہ ان کے پارٹی قائد گوجرانوالہ جلسہ میں موجودہ ملٹری قیادت کے نام لے رہے ہیں ۔

لاہور سے تعلق رکھنے والے اور ن لیگ میں اہم عہدوں پر رہنے والے رہنماء نے بتایاکہ ایک لمحے پر آپ ہمیں نے پارلیمنٹ میں انہیں (آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کیلئے ) ووٹ دینے کو کہا ، اب ہمیں ایک مختلف غیر مصالحاتی لائن لینے کو کہا جارہاہے ، اس پر مورخ ہمارے اوپر سوال نہیں اٹھائے گا۔ ان کا کہناتھاکہ دیکھتے ہیں کہ اس تبدیلی سے کیا نتیجہ نکلتا ہے ، اگر کوئی یہ سوچتا ہے کہ انقلاب ایسے آتا ہے تو وہ غلطی پر ہے ۔ ان کا مزید کہناتھا کہ ن لیگ اکیلے کچھ نہیں کرسکتی لیکن پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے کچھ مختلف کیا جا سکتا ہے ۔

دوسری کلاس کی طالبہ سے نازیبا حرکات کا الزام، پاکستانی سکول ٹیچر کو گرفتار کرلیا گیا

ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ خواجہ سعد رفیق نے بھی پارٹی سے اپنی راہیں جد ا کرلیں، وہ بھی پارٹی قیاد ت سے خوش نہیں، بیانیے کے علاوہ وہ اس بات سے بھی خوش نہیں کہ وہ اور ان کے بھائی جب جیل میں تھے تو پارٹی قیادت نے ان کے لیے کچھ نہیں کیا۔انہوں نے انکشاف کیا کہ " میں نے حال ہی میں فعال سیاست سے اپنے آپ کو الگ کرلیا ہے ، ہمیں دیکھنا ہے کہ آگے کیا ہوتا ہے " ان کا مزید کہنا تھاکہ وہ لاہور میں پی ڈی ایم کے جلسے کو کامیاب بنانے کے لیے کوئی تیاریاں بھی نہیں کررہے ، پارٹی کے پرانے لو گ نئے بیانیے کے ناقد ہیں تاکہ قیادت کی نئی نسل کو اس بیانیے سے امید اور بہتر مستقبل دکھائی دیتا ہے ۔

کورونا کے بڑھتے کیسز اور سکولوں کی بندش کی چہ مگوئیوں پر وفاقی وزیرتعلیم نے دوٹوک موقف دیدیا

ادھر برطانیہ میں موجود لیگی ذرائع نے پارٹی میں کسی بھی قسم کے اختلاف کی تردید کی اور ان میں سے ایک نے کہا کہ نوازشریف کی قیادت میں موجود پارٹی سے باہر کسی کا کوئی مستقبل نہیں ، اگر نوازشریف کے بیانئے سے الگ ہوئی تو پی ڈی ایم کا بھی کوئی مستقبل نہیں ۔ انہوں نے یہ بھی اعتراف کیا کہ سنٹرل ورکرز کمیٹی کے اجلاس میں نوازشریف نے پارٹی رہنمائوں کو یہ بھی تجویز دی کہ اگر وہ ان کے آنکھیں نہیں ملا سکتے تو وہ پارٹی چھوڑسکتے ہیں ۔

مزید :

Breaking Newsاہم خبریںقومیڈیلی بائیٹس

Original Article

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *