Categories
Breaking news

ستر فیصد منظم جرائم پیشہ نیٹ ورک تین یورپی ریاستوں میں اپنی سرگرم،یورو پول

Advertisement

یورپی پولیس کے ادارے یورو پول کے مطابق خطے میں منظم جرائم میں خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے۔منظم جرائم سے متعلق تجزیاتی رپورٹ پیر کو ہنگری کے دارالحکومت لزبن میں عام کی گئی۔ اس رپورٹ میں تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ منظم جرائم پیشہ گروہوں نے کورونا وبا کا فائدہ اٹھاتے ہوئے مختلف یورپی ممالک میں اپنے قدم جما لیے ہیں۔ رپورٹ میں یورو پول نے واضح کیا کہ یورپی یونین میں منظم جرائم سے جتنا خطرہ آج ہے پہلے کبھی نہیں تھا۔حکام کا کہنا ہے کہ جرائم پیشہ گروپ یورپ میں وبا کی وجہ سے درپیش طویل مدتی اقتصادی مشکلات اور سماجی پریشانیوں کا فائدہ اٹھانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق یہ حالات مجرموں کو اپنی سرگرمیاں بڑھانے میں مددگار ثابت ہو رہے ہیں اور وہ عام شہریوں، کاروبار اور پبلک سیکٹر کو نشانہ بنا رہے ہیں۔
پولیس کا خیال ہے کہ جرائم پیشہ گروپس یورپی ممالک کی اقتصادیات کو کمزور کرتے ہوئے کنٹرول کرنے کی کوشش میں ہیں۔یورو پول کے مطابق ستر فیصد منظم جرائم پیشہ نیٹ ورک تین یورپی ریاستوں میں اپنی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں۔ اس جائزے کے مطابق چالیس فیصد گینگ منشیات کے دھندے میں ملوث ہیں۔ اس دھندے کو جرائم پیشہ گروہوں کا سب سے بڑا منافع بخش کاروبار قرار دیا گیا ہے۔
اس جائزہ رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا کہ پیشہ ورانہ صلاحیتوں کی حامل کئی تنظیموں کے انڈر ورلڈ کے ساتھ گہرے روابط ہیں۔ یہ پروفیشنل تنظیمیں کاروباری ادارے کھولے ہوئے ہیں۔رپورٹ کے مطابق اسی فیصد جرائم پیشہ نیٹ ورک قانونی طور پر صحیح اور درست کاروبار کرتے ہیں۔ ان کے علاوہ ساٹھ فیصد گینگ اپنے کاروبار کو وسعت دینے کے لیے کرپشن کا سہارا لے رہے ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ غیر قانونی سرمائے کی منتقلی اور منی لانڈرنگ بھی انڈر ورلڈ مالی نظام کا حصہ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *