Categories
Breaking news

زیادتی کیس، ملزم عزیز اور طالبعلم کا طبی معائنہ

زیادتی کیس، ملزم عزیز اور طالبعلم کا طبی معائنہ

لاہور پولیس نے لاہور کے علاقے صدر میں واقع مدرسے کے طالب علم سے زیادتی کے ملزم مفتی عزیز الرحمٰن اور طالب علم صابر شاہ کا طبی معائنہ کروا لیا ہے۔

لاہور پولیس کے مطابق ملزم عزیز الرحمٰن اور طالب علم صابر شاہ کے طبی معائنے کی رپورٹ چند روز بعد آئے گی۔

طالبعلم سے زیادتی: عزیز الرحمٰن کے تینوں بیٹوں کی عبوری ضمانت

لاہور کی سیشن کورٹ نے مدرسے میں طالب علم سے زیادتی کے کیس میں ملزم عزیز الرحمٰن کے تینوں بیٹوں کی عبوری ضمانت منظور کر لی۔

لاہور پولیس نے بتایا ہے کہ ملزم عزیز الرحمٰن کا ڈی این اے بھی پنجاب فارنزک سائنس ایجنسی کے ڈیٹا بینک میں ڈال دیا گیا ہے۔

پولیس کے مطابق ملزم اور طالب علم کے میڈیکل کا حکم عدالت کی جانب سے دیا گیا تھا۔

طالبعلم سے زیادتی، مفتی عزیز بیٹے سمیت گرفتار

لاہور پولیس نے مدرسے میں طالبعلم سے زیادتی کرنے والے مفتی عزیز الرحمٰن کو میانوالی سے گرفتار کر لیا، پولیس کے مطابق مفتی عزیز الرحمٰن کے 1 بیٹے کو بھی گرفتار کیا گیا ہے۔

ملزم عزیز الرحمٰن 4 روز کے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کی تحویل میں ہے۔

ملزم سے واقعے کے بارے میں تفتیش جاری ہے، اسے جمعرات کو دوبارہ عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

مفتی عزیز کا دوسرا بیٹا کاہنہ سے گرفتار

لاہور پولیس نے مدرسے میں طالب علم سے زیادتی کرنے والے مفتی عزیز الرحمٰن اور ان کے ایک بیٹے کو میانوالی سے گرفتار کرنے کے بعد ان کے دوسرے بیٹے کو کاہنہ سے گرفتار کر لیا ہے۔

واضح رہے کہ طالب علم سے زیادتی کی ویڈیوز منظر عام پر آنے کے بعد ملزم مفتی عزیز اپنے 3 بیٹوں اور ساتھی کے ساتھ فرار ہو گیا تھا۔

ملزم کے خلاف طالب علم صابرشاہ کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

مفتی عزیز کا تیسرا بیٹا بھی گرفتار

لاہور کے مدرسے میں طالبعلم سے زیادتی کے ملزم مفتی عزیز الرحمٰن کے تیسرے بیٹے کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے۔

ملزم مفتی عزیز اور اس کے بیٹوں کو الگ الگ مقامات سے اتوار 20 جون کو گرفتار کیا گیا تھا۔

گزشتہ روز لاہور کی مقامی عدالت نے ملزم کے تینوں بیٹوں لطیف الرحمٰن، حفیظ الرحمٰن اور وصی الرحمٰن کی 30 جون تک عبوری ضمانت منظور کی تھی۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *