Categories
Breaking news

دوا ساز کمپنی فائزر اور بائیو این ٹیک کی ویکسین استعمال کرنے کی اجازت، یورپی یونین کا فیصلہ جاری

Advertisement

کورونا ویکسین

یورپی یونین نے امریکی دوا ساز کمپنی فائزر اور بائیو این ٹیک کی ویکسین استعمال کرنے کی اجازت دے دی ہے، یورپین میڈیسنز ایجنسی کا کہنا ہے کہ امید ہے کہ یہ نئے متغیر وائرس کیخلاف بھی مؤثر ثابت ہوگی۔

یورپی کمیشن کے دواؤں کے ریگولیٹرز نے بائیو این ٹیک اور فائزر ویکسین کے استعمال کی منظوری دے دی ہے اس منظوری کے بعد رواں برس کے اختتام پر ویکسین لگانی شروع کر دی جائے گی۔

اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ یورپی میڈیسین ایجنسی اور یورپی کمیشن نے فائزر بائیو این ٹیک کی تیار کردہ انسداد کورونا وائرس کی ویکسین کے استعمال کی باضابطہ منظوری گشتہ روز21 دسمبر کو دی۔

اس منظوری کے بعد براعظم یورپ کے چار سو ملین افراد کے لیے ویکسین لگانے کا وسیع پروگرام شروع ہو سکے گا۔ ویکسین لگانے کے انتظامات پہلے ہی کئی ملکوں نے ترتیب دے رکھے ہیں جن میں خاص طور پر جرمنی اور اسپین نمایاں ہیں۔

Advertisement

یورپی یونین میں یہ پہلی کووِڈ 19 ویکسین ہے جس کی منظوری دے گئی ہے۔ یہ ویکسین برطانیہ اور امریکہ میں پہلے ہی لگائی جا رہی ہے۔ یورپی کمیشن کے حکام نے کہا ہے کہ پوری یورپی یونین میں آئندہ اتوار اور منگل کے روز کے درمیان کسی وقت اسے لگانا شروع کر دیا جائے گا۔

یورپی یونین میں ادویات کے نگران ادارے، یورپین میڈیسنز ایجنسی نے مذکورہ ویکسین فراہم کرنے کا مشروط اجازت نامہ قبل ازیں پیر کے روز جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس ویکسین کے فوائد خطرات سے زیادہ ہیں۔ اس کے بعد یورپین کمیشن نے تیزی کے ساتھ حتمی منظوری دے دی۔

مذکورہ ایجنسی کے ایک عہدیدار نے ایک اخباری کانفرنس میں برطانیہ جیسے ملکوں میں پائی گئی کورونا وائرس کی نئی متغیر قسم کا ذکر کیا۔

اس عہدیدار کا کہنا تھا کہ ایسا کوئی ثبوت نہیں ہے جس سے عندیہ ملتا ہو کہ یہ ویکسین وائرس کی نئی متغیر قسم کے خلاف کام نہیں کرے گی۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *