Categories
Breaking news

خاتون کی جانب سے لاش چھوڑ کر جانے والے لڑکے کے ساتھ بدفعلی کے شواہد ملے ہیں، پولیس سرجن

خاتون کی جانب سے لاش چھوڑ کر جانے والے لڑکے کے ساتھ بدفعلی کے شواہد ملے ہیں، پولیس سرجن

کراچی کے علاقے بہادرآباد کے نجی اسپتال میں خاتون کی جانب سے لڑکے کی تشدد زدہ لاش چھوڑ کر جانے کے معاملے میں مزید پیش رفت ہوئی ہے، رپورٹ کے مطابق لڑکے کے ساتھ بدفعلی کے شواہد ملے ہیں۔

لڑکے کی لاش کو اسپتال میں چھوڑ کر بھاگنے والی خاتون کی ویڈیو سامنے آگئی

ابتدائی معلومات کے مطابق لڑکا گھریلو ملازم تھا، جس پر بد ترین تشدد کیا گیا، لڑکے کی ٹانگوں اور چہرے پر تشدد کےنشانات موجود ہیں۔

پولیس سرجن ڈاکٹر سمیہ سید کا کہنا ہے کہ جناح اسپتال میں لڑکے کی لاش پوسٹ مارٹم کیلئے لائی گئی، لاش بہادرآباد تھانے کے اہلکار لائے تھے۔

پولیس سرجن کا کہنا ہے کہ لڑکے کے جسم پر تشدد کے نشانات موجود تھے، پوسٹ مارٹم میں لڑکے کے ساتھ بدفعلی کے بھی شواہد ملے۔

ڈاکٹر سمیہ سید کا کہنا ہے کہ ابتدائی تحقیقات میں وجہ موت دم گھٹنے سے ہوئی، موت کی حتمی وجہ تفصیلی رپورٹ آنے کے بعد معلوم ہو سکے گی۔

پولیس سرجن کا کہنا ہے کہ ڈی این اے نمونے بھی شناخت کیلئےحاصل کیے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ بہادرآباد میں نجی اسپتال کے قریب سے 12 سال کے لڑکے کی تشدد زدہ لاش ملی تھی، جسے اسپتال لانے والی خاتون فرار ہو گئی۔

پولیس حکام کے مطابق ایک خاتون لڑکے کو علاج کے لیے نجی اسپتال لے کر آئی تھی، اسپتال میں دورانِ علاج لڑکے کا انتقال ہو گیا۔

پولیس حکام نے مزید بتایا ہے کہ خاتون نے ایمبولینس منگوا کر لڑکے کی میت کو سرد خانے بھجوانے کا کہا، جیسے ہی ایمبولینس میت لے کر روانہ ہوئی خاتون غائب ہو گئی۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *