Categories
Breaking news

جماعت اسلامی کا بجلی کی لوڈشیڈنگ کیخلاف احتجاجی مہم کا اعلان

امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمٰن نے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ پر کے۔الیکٹرک کی خلاف پیر سے احتجاجی مہم کا اعلان کردیا۔ 12 جون کو کے۔الیکٹرک کے ہیڈ افس کا گھیراؤ بھی کیا جائےگا۔

حافظ نعیم نے کہا کہ ایک طرف بحلی کا بحران ہے اور دوسری طرف کراچی کے عوام پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں۔

حافظ نعیم الرحمان نے گورنر ہاؤس کے باہر عوامی پریس کانفرنس کی۔

ان کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت اور نیپرا عوام کو سہولت دینے کی بجائے کے۔الیکٹرک کو نواز رہے ہیں، اضافی بجلی کے باوجود سات، سات گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ ہورہی ہے، اس کے باوجود کراچی میں بجلی فی یونٹ 8 روپے مہنگی کی جارہی ہے۔

کے۔الیکٹرک کیلئے بجلی کی قیمتوں میں ردوبدل کا فیصلہ، نیپرا

جون 2020 کے فیول چارجز ایڈجسٹمنٹ کی مد میں 75 پیسے فی یونٹ کمی کی گئی، جولائی 2020 کے فیول چارجز ایڈجسٹمنٹ کی مد میں 73 پیسے فی یونٹ اضافہ کیا گیا۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ کے۔الیکٹرک کا معاہدہ ختم کیا جائے ۔

حافظ نعیم الرحمٰن کا کہنا تھا کہ آج بھی تمام سیاسی جماعتیں کے۔الیکٹرک کے ساتھ مل کر کراچی کے عوام کو لوٹنے میں مصروف ہیں جبکہ عوام پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کے سابق ناظم نعمت اللّٰہ خان کے بعد کراچی کو ملنے والے پانی میں ایک بوند کا اضافہ نہیں ہوا۔

حافظ نعیم نے چیف جسٹس سپریم کورٹ سے اپیل کی کہ کے۔الیکٹرک کے خلاف پانچ سال سے زیر التواء جماعت اسلامی کی درخواست فوری طور پر سنی جائے۔

حافظ نعیم نے تعلیمی ادارے کھولنے اور تاجروں کے مطالبہ کی حمایت کا اعلان بھی کیا۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *