Categories
Breaking news

جب سپریم کورٹ کا فیصلہ موجود ہے تو صدارتی ریفرنس کیوں داخل کیا گیا، جسٹس یحییٰ آفریدی

Advertisement

سینیٹ الیکشن اوپن بیلٹ سے کروانے سے متعلق صدارتی ریفرنس پر کیس کی سماعت کے دوران عدالت نے ریمارکس دیئے کہ جب سپریم کورٹ کا فیصلہ موجود ہے تو صدارتی ریفرنس کیوں داخل کیا گیا۔

الیکشن کمیشن کے وکیل شرجیل سواتی نے موقف اختیار کیا کہ الیکشن کمیشن نے سینیٹ انتخابات کا شیڈول جاری کردیا ہے، سینٹ انتخابات کے لیے پولنگ 3 مارچ کو ہوگی۔

جسٹس یحییٰ آفریدی نے ریمارکس دیئے کہ جب دو مختلف فیصلے ہوں گے تو کیا صدارتی ریفرنس داخل کر دیا جائے گا، آپ اعلی عدلیہ سے کس قسم کی نظیر قائم کرواناچاہتے ہیں۔

مسلم لیگ ن نے صدارتی ریفرنس پر تحریری موقف سپریم کورٹ میں جمع کروادیا

درخواست میں استدعاکی گئی ہے کہ عدالت قرار دے سینیٹ انتخابات پر آرٹیکل 226 کا اطلاق ہوتا ہے۔

عدالت نے کہا کہ الیکشن کمیشن شیڈول کی نقل متفرق درخواست کے ذریعے داخل کرے۔

سینیٹ الیکشن اوپن بیلٹ سےکروانےسےمتعلق صدارتی ریفرنس پرسماعت پیر تک ملتوی کردی گئی۔

اٹارنی جنرل خالد جاوید نے کہا کہ اپنے دلائل پیر کو مکمل کر لوں گا، سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ کا فیصلہ آنے سے ہمت ہوئی، میں اپنے ناتواں کندھوں پر اتنا بوجھ نہیں لے سکتا۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *