Categories
Breaking news

جامعہ کراچی خودکش دھماکے کا مبینہ سہولت کار گرفتار

جامعہ کراچی خودکش دھماکے کا مبینہ سہولت کار گرفتار

کراچی یونیورسٹی میں خودکش دھماکے کے مبینہ سہولت کار مشتبہ شخص بیبگار امداد کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

مشتبہ شخص کو سی ٹی ڈی نے موبائل فون کے لنک کی وجہ سے گرفتار کیا گیا ہے۔

جامعہ کراچی میں ہونے والے خودکش حملہ کی تحقیقات میں اہم انکشافات

تحقیقاتی ذرائع کا کہنا ہے کہ خاتون خودکش حملہ آور کا شوہر جناح اسپتال کے قریب ہوٹل میں رہائش پذیر تھا، خاتون بھی اس ہوٹل میں فیملی کے ہمراہ رہتی رہی ہے۔

تحقیقاتی ذرائع کے مطابق جامعہ کراچی میں خود کش دھماکا کرنے والی خاتون بیگ میں دھماکا خیز مواد لے کر سلور جوبلی گیٹ سے داخل ہوئی تھی، وہ جس دوسری عورت سے ملی وہ اس کی ’’لاسٹ منٹ ہینڈلر‘‘ تھی۔

دوسری خاتون نے دھماکے سے کچھ دیر پہلے خودکش حملہ آور خاتون کو بریف کیا اور چلی گئی۔

تحقیقاتی ذرائع کے مطابق حملہ آور خاتون کینٹ اسٹیشن کے قریب فلیٹ میں قیام پزیر تھی ، خاتون کا شوہر جناح اسپتال کے قریب ہوٹل میں مقیم تھا، خاتون بھی اس ہوٹل میں فیملی کے ہمراہ رہتی رہی ہے۔

دھماکا کرنے سے پہلے خاتون اور اس کے شوہر نے شادی کی سال گرہ بھی منائی ، خاتون کا شوہر بلوچستان میں ڈاکٹر اور جناح اسپتال میں ٹریننگ پروگرام میں شریک تھا ، سوشل میڈیا پر خودکش دھماکے کے بعد اہلیہ کی تعریف بھی کی۔

شوہر ماسٹر مائنڈ بھی ہوسکتا ہے ، وہ دھماکے سے پہلے ہی بچوں سمیت غائب ہوگیا ، جامعہ کراچی ایچ ای جے فارنزک لیبارٹری کو چار ہلاک افراد کے ڈی این اے سیمپلز موصول ہوگئے۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published.