Categories
Breaking news

بیگو کے استعمال سے ممانعت، خاتون نے خلع کیلئے عدالت سے رجوع کرلیا، جانیے تفصیلات

Advertisement
Advertisement

بیگو لائیو اسٹریمنگ ویڈیو کال ایپلی کیشن بیگو کو استعمال کرکے پیسے کمانے والی ایک خاتون نے شوہر کی جانب سے روکے جانے پر خلع کے لیے عدالت سے رجوع کرلیا۔

لاہور کی فیملی کورٹ میں خاتون کنزہ اعجاز نے شوہر کے روکے جانے کے بعد خلع کی درخواست دائر کی۔ فیملی کورٹ میں دائر کی گئی درخوست میں عدالت سے خلع کی ڈگری جاری کرنے کی درخواست کی گئی۔ درخواست میں خاتون نے موقف اختیار کیا کہ شوہر انہیں بیگو ایپلی کیشن استعمال کرنے اور دوسرے لوگوں سے ویڈیو چیٹ کرنے سے روکتے ہیں۔

درخواست میں خاتون نے دعویٰ کیا کہ وہ بیگو استعمال کرکے یومیہ 1500 روپے سے زائد تک کما لیتی ہے ، ساتھ ہی دعوی کیا کہ شوہر کی کم کمائی سے گھر کے اخراجات نہیں چلتے۔

خاتون کی جانب سے درخواست میں کہا کیا گیا کہ ان کے شوہر کی کمائی سے گھر کا گزر بسر مشکل سے ہوتا ہے۔ بیوی کی جانب سے خلع کے لیے عدالت سے رجوع کیے جانے کے بعد شوہر نے ابتدائی طور پر عدالت کو بتایا کہ ان کی بیوی غیر محرم مرد حضرات کے ساتھ سوشل ایپلی کیشن پر غیر شرعی اور غیر اخلاقی باتیں کرتی ہیں۔

شوہر نے عدالت کو آگاہ کیا کہ ان کی جانب سے نا محرم مردوں سے باتیں کرنے سے روکنے پر بیوی نے عدالت میں خلع کی درخواست دائر کی۔

شوہر نے عدالت کو یہ بھی بتایا کہ وہ رکشہ ڈرائیور ہے اور محنت مزدوری کرکے گھر چلا رہا ہے ۔

خاتون کی درخواست پر جج فراز جاوید وڑائچ نے 18 اگست کو مختصر سماعت کرتے ہوئے خاتون کے شوہر سے ایک روز میں حتمی جواب طلب کرلیا۔

مذکورہ درخواست پاکستان میں اپنی نوعیت کی پہلی اور منفرد درخواست ہے جس میں کسی خاتون نے سوشل میڈیا کے استعمال سے روکنے پر شوہر سے خلع کی درخواست دائر کی ہے۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *