Categories
Breaking news

بارسلونا کے نواحی شہر خستہ حال کیوں ہیں؟ وجہ جانیے

بارسلونا (محمد نبی) کئی سالوں سے بارسلونا میٹرو ایریا میں سب سے بڑے شہر آئے روز دولت مند اور آسودہ حال رہائشیوں سے محروم ہو رہے ہیں۔ نتیجتا پڑوس کے بلدیات میں دولت کی ایک نہ پٹنے والی خلا پیدا ہو رہی ہے۔ جب ایک ہی بلدیہ (municipality) میں مختلف ZIP کوڈ نکالے جائیں تو اوسط فی کس آمدنی میں اب بھی ایک بڑی لکیر کھینچی جا سکتی ہے مگر یہ لکیر مزید بڑی ہو جاتی جب سارے بلدیات کا تقابلی جائزہ پیش کیا جائے۔ حکومت اور پبلک پالسی کے ادارے (IGOP) کے ڈائرکٹر، اسماعیل بلینکو نے کاتالان نیوز کے ساتھ ایک انٹریو میں کہا ہے کہ بعض شہر بڑے پیمانے پر دولت مند افراد کو اپنی طرف کھینچتے ہیں۔ جب کہ کچھ شہر اس کے برعکس غریب آبادی کے لئے لچک رکھتے ہیں۔

ایک ایسا ہی قصبہ ماتارو( Mataró) کا ہے جس کی اوسط آمدنی 11,657.8 یورز ہے جو کاؤنٹی کے دیگر اوسط آمدنی سے 15 فیصد کم ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ شہر کی دولت مند آبادی پڑوس میں واقع ٹاؤنز Argentona اور Cabrera de Mar کو منتقل ہو چکی ہے۔ ان دونوں شہروں کی فی کس آبادی میتیرو کے مقابلے میں کافی زیادہ ہے۔ دوسرے شہر جو اسی صورت حال سے گزر رہے ہیں، ان میں سبا دیل سرفہرست ہے جس کی اوسط فی کس آمدنی €13,046.3 ہے جب کہ اس پر سبقت لے جانے والے Castellar del Vallès اورSant Quirze del Vallès کی فی کس آمدنی بالترتیب €14,201.7 اور €18,163.2 ہے۔ Granollers کی فی کس آمدن €13,407.3 ہے جب کہ La Garriga جو €14,682.1 کے ساتھ اس سے آگے نکل گیا ہے۔ اسی طرح اسپین کا سب سے دولت مند گاؤں Matadepera کی اوسط فی کس آمدنی €24,738.1 ہے۔ دوسری طرف Terrassaاسے پیچھے رہ جانے والا شہر ہے جو €12,640.9 پر کھڑا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *