Categories
Breaking news

اپوزیشن نے نیب کے معاملے پر 34 شقوں میں ترامیم کیں، شبلی فراز

Advertisement

وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز کا کہنا ہے کہ اپوزیشن نے نیب کے معاملے پر 34 شقوں میں ترامیم کیں، عوام کو معلوم ہونا چاہیے کہ این آر او پر بات کرنے کا پس منظر کیا ہے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شبلی فراز نے کہا کہ اپوزیشن کہتی ہے ہم نے این ار او مانگا ہی نہیں، اپوزیشن یہ بھی کہتی ہے کہ نہ ہی وزیراعظم این آر او دے سکتے ہیں۔

شبلی فراز نے کہا کہ فیٹف کے بل پر بات ہوئی تو میں اس کمیٹی کا ممبر تھا جس میں اپوزیشن قیادت بھی تھی، اجلاس شروع ہوا تو سب سے پہلا سوال اپوزیشن نے کیا کہ نیب کا بل کہاں ہے؟، شاہ محمود قریشی نے کہا کہ نیب کے بل پر بعد میں بحث کرلیں گے، جس کے بعد اپوزیشن کمیٹی کی میٹنگ سے باہر چلی گئی اور آدھے گھنٹے بعد آئی۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ نیب کی38 شقوں میں سے اپوزیشن نے 34 شقوں پر ترامیم پیش کیں، پہلی تبدیلی اپوزیشن نے کہی کے نیب کے قانون کی عملداری 1999 سے کی جائے، اس کا اصل فائدہ چودھری شوگر مل کیسز والوں کا ہوتا۔

شبلی فراز کا کہنا تھا کہ اپوزیشن نے کہا کہ نیب کی کوئی خلاف ورزی نہیں ہوگی اگر ایک ارب سے کم کی کرپشن ہوگی، اس ترمیم سے جن کے کیسز ایک ارب روپے سے کم کرپشن کے ہیں ان کو چھوٹ مل جاتی، منی لانڈرنگ کی شق پر کہا گیا کہ اس کو بطور جرم ہٹا دیا جائے۔

نوازشریف اور مولانا فضل الرحمان کو ہر فورم پر بے نقاب کریں، وزیراعظم عمران خان

عمران خان نے کہا کہ اپوزیشن نے نیب قانون میں ترمیم کی شکل میں این آر او مانگا، اپوزیشن کی تحریک کا دوسرا مرحلہ بھی ناکام ہوگا۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ اس کے بینیفشری شہباز شریف، آصف زرداری اور فریال تالپور اثاثے کیس ہوتے، ان کی ترمیم تھی کہ نیب 2015 سے پہلے کے کرپشن کیسز کی تحقیقات نہیں کرے گا، اس ترمیم سے پیپلز پارٹی اور ن لیگ کو این آر او پلس مل جاتا۔

شبلی فراز نے کہا کہ تیسری شق منی لانڈرنگ کی تھی، اپوزیشن نے کہا منی لانڈرنگ کو جرم نہ سمجھا جائے، چوتھی شق بےنامی کے متعلق تھی اپوزیشن نے کہا بچوں اور اہلیہ کو باہر نکالا جائے، ان کی 8ویں ترمیم تھی کہ نااہلی نہیں ہوگی جب تک سپریم کورٹ کی طرف سے حکم نہ آئے۔

یہ بھی پڑھیے

ا نہوں نے کہا کہ مطلب مقدمے کو دس بیس سال چلاتے رہیں جب تک فیصلہ نہ ہو نااہل نہ کیا جائے، عدالت سے نااہلی کچھ کیسز میں تاحیات اور کچھ میں دس سال ہوتی ہے، اپوزیشن کی جانب سے کہا گیا کہ عدالت سے نااہلی کی مدت پانچ سال کی جائے۔

شبلی فراز نے کہا کہ اپوزیشن کو پتا ہے کہ جب تک وزیراعظم عمران خان ہیں یہ اپنے چوری کا تحفظ نہیں کرسکتے، اپوزیشن ریلیاں کرنا چاہتی ہے کریں لیکن عوام کی صحت کا خیال رکھیں، کورونا بہت بڑھ گیا ہے۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *