Categories
Breaking news

اومیکرون کے بڑھتے کیسز, بھارت کے کئی علاقوں میں کرفیو لگانے کا فیصلہ

لاک ڈاؤنکرونا وائرس کے بڑھتے کیسز کے پیش نظر بھارت کے کئی علاقوں میں کرفیو لگانے کا اعلان کیا گیا ہے۔

بھارت میں ایک ہی دن میں 37 ہزار سے زیادہ نئے کیسز سامنے آنے کے بعد پنجاب اور مرکز کے زیر انتظام دہلی کی ریاستوں نے وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے سخت اقدامات نافذ کر دیے ہیں۔

دہلی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی نے منگل کو قومی دارالحکومت میں ویک اینڈ کرفیو نافذ کرنے کا فیصلہ کیا ہے، کرفیو کے دوران صرف ضروری نقل و حرکت کی اجازت ہوگی، تمام سرکاری دفاتر میں گھر سے کام کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے، جب کہ نجی دفاتر کو 50 فی صد حاضری پر کام کرنے کی اجازت ہوگی۔

اس دوران پنجاب حکومت نے بھی ضروری سروسز کو چھوڑ کر رات 10 بجے سے صبح 5 بجے تک ریاست میں رات کا کرفیو نافذ کر دیا ہے، تمام تعلیمی ادارے بند رہیں گے، ج بکہ آن لائن کلاسز جاری رہیں گی۔

مزید برآں، بارز، سینما ہالز، مالز، ریسٹونٹس اور اسپاز کو 50 فی صد حاضری کے ساتھ کام کرنے کی اجازت ہوگی، اس کے ساتھ عملے کی مکمل ویکسینیشن بھی کی جائے گی۔

ریاست تلنگانہ میں 8 اور 16 جنوری کے درمیان ریاست بھر کے تمام تعلیمی اداروں کے لیے ہندو مکر سکرنتی تہوار کی تعطیلات کا اعلان کیا گیا ہے، ممبئی میں بھی اسکول بند کر دیے گئے ہیں،۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست بہار میں 3 دن میں 168 ڈاکٹرز میں کرونا کی تشخیص ہو چکی ہے، بھارت میں ممبئی سے گوا جانے والے کروز جہاز کے تمام مسافروں کو بھی واپس بھیج دیا گیا ہے، جس میں 2 ہزار مسافروں میں سے 66 میں کرونا کی تشخیص ہوئی تھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *