Categories
Breaking news

انتخابی اصلاحات پر صدر علوی کی اپوزیشن کو مشاورت کی دعوت

صدر مملکت عارف علوی نے انتخابی اصلاحات پر بات چیت کے لیے اپوزیشن کو بلا لیا۔

صدر مملکت کا کہنا ہے کہ انتخابی اصلاحات پر وہ اپوزیشن کو مشاورت کے لیے ایوان صدر آنے کی دعوت دیتے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جیو نیوز کے پروگرام ’آج شاہ زیب خان زادہ کے ساتھ‘ میں گفتگو کے دوران کیا۔

عارف علوی نے کہا کہ الیکٹرونک ووٹنگ سسٹم کامطلب یہ نہیں کہ اس میں بیلٹ پیپرنہیں ہوگا، الیکٹرونک ووٹنگ سسٹم میں بیلٹ پیپر موجود ہے۔

صدر مملکت نے کہا کہ بھارت میں الیکٹرونک ووٹنگ سسٹم 1985سےچل رہا ہے ،2017کےالیکشن ریفارمزایکٹ میں بائیومیٹرک شناخت کی بات رکھی گئی تھی ،بائیومیٹرک سسٹم سےاصل ووٹرکی شناخت ہوگی۔

عارف علوی نے کہا کہ الیکٹرونک سسٹم میں مشین سےانتخابی نشان پر بٹن دبا کر پرچی نکالی جائےگی، مشین سےنکلی پرچی بیلٹ بکس میں ڈالی جائے گی ، فزیکل بیلٹ پیپرزحتمی نتائج کیلئے شمار ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ جتنی میٹنگ ہوئی ہیں اس میں الیکشن کمیشن کے نمایندے آئے ہیں، میرا کام سب کو اکٹھا کرکے ایک دوسرے سے روابط قائم کروانا ہے۔

عارف علوی نے کہا کہ آرڈیننس اس لیے آئیگا 3لاکھ پولنگ بوتھ ہوں گے3لاکھ 25ہزارمشینیں بنانی ہیں، سب کی مشاورت سے معاملہ حل ہو جائے تو یومیہ ایک ہزار مشینیں بننی ہیں۔

صدرمملکت نے کہا کہ دیگرممالک میں بھی الیکٹرونک ووٹنگ سسٹم ختم نہیں ہوا، الیکٹرونک ووٹنگ سسٹم ہماری ضرورت ہے، الیکٹرونک ووٹنگ سسٹم اور فزیکل ووٹ بھی ہوگا تواعتراض کس چیز پر ہے۔

عارف علوی نے کہا کہ بیلٹ پیپر کا سسٹم ختم نہیں کررہے اس کو بھی مزید بہتر کر رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ عید کے بعد الیکٹرونک ووٹنگ مشین پارلیمنٹ میں مشاہدے کیلئےرکھ دیتےہیں، اپوزیشن کو بھی ایوان صدر آنے کی دعوت دیتا ہوں۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *