Categories
Breaking news

اسپین: ٹرین لائین تو بن گئی مگر رومن سلطنت کے محل کا دٔکھ 30 سال بعد بھی نہ گیا

میڈرڈ (محمد نبی) یہ ہسپانوی تاریخی ورثے پر ایک بڑا، مہلک حملہ تھا۔ اسپین کے قومی اثاثے کا گھاؤ اتنا گہرا تھا کہ 30 سال گزرنے کے بعد بھی وہ رومن سلطنت کے محل کو نہیں بھولے ہیں۔ قرطبہ میں موجود رومن سلطنت کا یہ شاہی محل 293 اور 305 کے درمیان بادشاہ میکسیمین ہرکولیس نے تعمیر کیا تھا جسے 30 سال قبل تیز رفتار ٹرین کے راستے سے ہٹایا گیا تھا۔

ایک چھوٹا ریلوے اسٹیشن 19 ویں صدی سے ہی اس جگہ کے کچھ حصے کو اپنی تحویل میں لے چکا تھا۔اس کے اسٹاپ میں ایک چھوٹی عمارت ، پلیٹ فارم ، پارکنگ اور ریلوے جنکشن شامل تھا جس میں سمت کی تبدیلی ممکن تھی بعد میں اندلس کے جنوبی علاقے قرطبہ میں واقع شاہی ورثے کو مئی 1991 میں تیز رفتار AVE ٹرین سٹیشن کے لیے مسمار کیا گیا۔ اسپین کی افتتاحی اے وی ای لائن میڈرڈ سے سویا تک بچھائی گئی تھی۔ اس کا مقصد یہ بھی تھا کہ سویا 1992 کے ورلڈ ایکسپو کی میزبانی کرے گا۔

ثقافتی ایسوسی ایشن فرینڈز آف میدینا ایزاہرہ کی صدر انا زمورونو کا کہنا ہے کہ یہ بہت تکلیف دہ ہے۔ انہوں نے آن لائن تقریب کا اہتمام کیا تھا۔ 22 مئی 1991 کوپرانے اسٹیشن کو نئے اسٹیشن میں تبدیل کرنے اور AVE کو شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ اس کے ساتھ ہی زمین کی کھدائی، محل کو نیست و نابود کرنے اور آس پاس کی جگہوں کو ہموار کرنے کا کام شروع ہوا۔ ماہرین آثار قدیمہ سے جو کچھ بن پڑا، تاریخی اثاثے کو بچانے کی کوشش کی۔ لیکن کچھ ہی دنوں میں آدھا کلومیٹر لمبا اور 200 میٹر چوڑا علاقہ مکمل طور پر ڈھا دیا گیا تھا۔ میڈیا اطلاعات کے مطابق قبرستان کے پتھروں ، پچی کاریوں ، رومن تھیٹر ، ایک مندر ، ایک سرکس ، امیفی تھیٹر اور ایک محل کو مسمار کر دیا گیا تھا۔

اس واقع کو بیتے 30 سال کا عرصہ ہو گیا۔ آج بھی رومن سلطنت کے اس یاد گار شاہی محل کی یاد میں تقریبات کا اہتمام ہوتا ہے اور اس کو بھولنے نہیں دیا جاتا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *