Categories
Breaking news

اسپین حکومت کا آزادئ اظہار رائے کے قوانین پر نظر ثانی کا فیصلہ

Advertisement

بارسلونا(ڈاکٹرقمرفاروق)ریپ موسیقی کار پابلو ہاسل Pablo Hasel کی سزا پر تنازع کے پیش نظر سپین کی بائیں بازو کی حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ آزادئ اظہار رائے سے متعلق قوانین پر نظر ثانی کرنے جا رہی ہے۔ یہ اعلان اس وقت سامنے آیا جب پابلو کے حق میں بڑی سطح پر احتجاج ہوئے اور ایک منشور پر دو سو سے زیادہ دستخط کیے جن میں ممتاز آرٹسٹ بھی شامل تھے۔ دریں اثنا اس فیصلے کی مزمت انسانی حقوق کی علمبردار تنظیم ایمنیسٹی انٹرنیشنل کی طرف سے بھی آیا۔ درخواست جمع ہونے کے کچھ عرصہ بعد حکومت نے اعلامیہ جاری کیا کہ وہ اظہار رائے کی حدود کے تعین کے حوالے سے قانوں کا دوبارہ جائزہ لے گی۔ نظر ثانی عدالتی وزارت کرے گی۔ جہاں ملزم کو جیل بھیجنے کے بجائے تحلیلی کاروائی کرنے پر غور کیا جائے گا۔پابلو ہیسل پر الزام تھا کہ اس نے اپنی ٹویٹ میں بادشاہ اور ریاستی اداروں بشمول پولیس کی توہین کی ہے اور انتہا پسندی کو ہوا دی۔ عدالت نے 2018 میں ہاسیل کو نو ماہ قید کی سزا سنائی تھی۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *