Categories
Breaking news

اسلام آباد: فواد چوہدری کی پیشی، کمرہ عدالت تبدیل

اسلام آباد: فواد چوہدری کی پیشی، کمرہ عدالت تبدیل

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینئر رہنما فواد چوہدری کی پیشی کےلیے کمرہ عدالت تبدیل کردیا گیا۔

سماعت کے آغاز میں مجسٹریٹ نوید خان نے کہا کہ کسی طرح فواد چوہدری کو کمرہ عدالت میں آنے دیں۔

اس موقع پر فیصل چوہدری نے غیر متعلقہ افراد کو کمرہ عدالت سے باہر جانے کی درخواست کردی۔

فیصل چوہدری نے مجسٹریٹ سے کہا کہ فواد چوہدری کدھر ہیں؟ گاڑی کہاں ہے؟ ہم انہیں لے آتے ہیں۔

اس پر مجسٹریٹ نے ریمارکس دیے کہ کمرہ عدالت میں جگہ بنے گی تو فواد چوہدری کو لے آئیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کورٹ میں 15،20 افراد ہوں گے تو فواد چوہدری کو لے آئیں گے۔

اس کے بعد ڈیوٹی مجسٹریٹ عدالت سے اٹھ کر اپنے چیمبر میں واپس چلے گئے ۔

پی ٹی آئی کے سینئر رہنما غیر متعلقہ افراد کو کمرہ عدالت سے باہر نکالتے رہے، اس دوران فیصل چوہدری نے پی ٹی آئی کی خواتین ورکرز سے کہا کہ آپ کی فواد چوہدری سے ملاقات بھی کرائیں گے۔

اس سے قبل فواد چوہدری کے وکیل قیصر امام اسلام آباد کی ایف 8 کی عدالت کے کمرے میں پہنچے، پیشی کے موقع پر پولیس اہلکاروں اور پی ٹی آئی کارکنوں میں تلخ کلامی اور دھکم پیل ہوئی۔

پی ٹی آئی اسلام آباد کے رہنما اس دوران پولیس اہلکاروں سے الجھ پڑے، مقامی رہنما اہلکاروں کو دھکیلتے ہوئے کمرہ عدالت میں داخل ہوگئے۔

فواد چوہدری کی پیشی کےلیے کمرہ عدالت رش ہونے اور جگہ کی تنگی کے باعث تبدیل کردیا گیا۔

ڈیوٹی مجسٹریٹ نوید خان اب دوسرے جج کے کمرے میں سماعت کریں گے، عدالت میں پی ٹی آئی اور الیکشن کمیشن کے وکلا پہنچ گئے ہیں۔

فواد چوہدری کی بازیابی کی درخواست خارج

لاہور ہائیکورٹ میں فواد چوہدری کی بازیابی سے متعلق درخواست کی سماعت پھر شروع ہوگئی۔

مجسٹریٹ نوید خان نے اس حوالے سے کہا کہ کورٹ روم سیکنڈ فلور پر ہے، دوران سماعت مشکلات ہوں گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ شبیر بھٹی کی عدالت گراؤنڈ فلور پر ہے، وہاں پر سماعت میں آسانی ہوگی۔

فواد چوہدری کو اب الیکشن کمیشن کے ارکان کو دھمکیاں دینے کے الزام میں گرفتاری کے بعد ڈیوٹی مجسٹریٹ شبیر بھٹی کے کمرہ عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

اس سے قبل اطلاع آئی تھی کہ فواد چوہدری کو سخت سیکیورٹی حصار میں ایف ایٹ کچہری پہنچایا جائے گا، انہیں سفید چادر ڈال کر پولیس گاڑی میں بٹھایا گیا ہے۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *