Categories
Breaking news

ارشد شریف قتل کی پولیس تحقیقات میں تضادات ہیں: کینین رپورٹر

مقتول صحافی ارشد شریف کی یادگار تصویر، وہ گاڑی جس میں انہیں قتل کیا گیا—فائل فوٹو
مقتول صحافی ارشد شریف کی یادگار تصویر، وہ گاڑی جس میں انہیں قتل کیا گیا—فائل فوٹو

کینیا کے نیوز چینل کی کرائم رپورٹر نگینہ کروری نے اعتراف کیا ہے کہ پاکستانی صحافی ارشد شریف کے قتل کی کینیا پولیس کی تحقیقات تضادات سے بھری ہوئی ہے۔

’جیو نیوز‘ سے گفتگو کرتے ہوئے کینیا کے نیوز چینل کی کرائم رپورٹر نگینہ کروری نے کہا کہ کینیا میں ہونے والی تحقیقات میں کئی خامیاں اور تضاد نظر آ رہے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ پاکستانی ٹیم کینیا کے حکام کی نسبت جلد معاملے کی تہہ تک پہنچے گی، حقائق سامنے لانے کے لیے وقار احمد اور خرم احمد اہم گواہ ہیں۔

ارشد شریف قتل: وقار اور اہلیہ کی نیروبی پولیس کے سامنے پیشی کا حکم

پاکستانی صحافی ارشد شریف کے قتل کے کیس میں کینیا میں مقیم وقار احمد اور ان کی اہلیہ کو نیروبی میں انڈیپنڈنٹ پولیس اوور سائٹ اتھارٹی کے سامنے پیش ہونے کا حکم دیا گیا ہے۔

کینین کرائم رپورٹر نے کہا کہ سچ سامنے آئے گا لیکن لگتا نہیں کہ وہ کینیا پولیس یا وقار کی طرف سے سامنے آئے، سچ سامنے لانے کے لیے انڈی پینڈنٹ آرگنائزیشن کا کردار بھی اہم ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ پولیس نے کہا کہ روڈ بلاک کیا تھا جبکہ وہاں چھوٹے پتھر تھے، ناکہ بندی بھی نہیں تھی، جی ایس یو کے افسران روڈ بھی بلاک نہیں کرتے۔

نگینہ کروری کا کہنا ہے کہ دونوں گاڑیوں کی نمبر پلیٹس بھی مختلف تھیں، پی این ایس نے ارشد شریف کے قتل کے واقعے سے متعلق واضح بیان بھی نہیں دیا۔

کینیا کے نیوز چینل کی کرائم رپورٹر کا مزید کہنا ہے کہ کینیا میں ارشد شریف کی پوسٹ مارٹم رپورٹ بھی جاری نہیں کی گئی۔

ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ ابتداء میں خرم اور پاکستانی ہائی کمیشن نے پولیس کے مؤقف سے اتفاق کیا تھا لیکن پھر رائے تبدیل کر لی۔

کینیا پولیس کے ہاتھوں ارشد شریف کا قتل

کینیا میں موجود صحافی ارشد شریف کو 22 اور 23 اکتوبر کی درمیانی شب گاڑی میں جاتے ہوئے کینین پولیس نے فائرنگ کر کے قتل کر دیا تھا۔

ارشد شریف قتل: فیصل واؤڈا، مراد سعید FIA میں طلب

صحافی ارشد شریف کے قتل کے کیس میں پاکستان تحریکِ انصاف کے رہنما فیصل واؤڈا اور مراد سعید کو فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی نے پیر کو وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے کے ہیڈ کوارٹرز میں طلب کر لیا۔

کینیا پولیس کی جانب سے ارشد شریف کی موت کو شناخت کی غلطی قرار دے کر افسوس کا اظہار کیا گیا تھا۔

ایف آئی اے اور انٹیلی جنس بیورو کے افسران پر مشتمل ٹیم صحافی ارشد شریف کے قتل کی تحقیقات کے لیے 28 اکتوبر کو کینیا گئی تھی۔

مذکورہ ٹیم ارشد شریف کے قتل کی تحقیقات مکمل کرنے کے بعد کینیا سے پاکستان واپس پہنچ چکی ہے۔

قومی خبریں سے مزید

Original Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *